بہار- جھارکھنڈتازہ ترین خبریں

کسان تحریک: گورنر ہاؤس مارچ کر رہے کسانوں پر لاٹھی چارج، کئی زخمی

پٹنہ، (یو این آئی)
زرعی قوانین کی مخالفت میں دہلی میں تحریک کر رہے کسانوں کی حمایت میں بہار کے دار الحکومت پٹنہ میں آج گورنر ہاﺅس مارچ کر رہے کسانوں کو روکنے کیلئے پولیس نے لاٹھی چارج کیا۔ جس میں کئی مظاہرین زخمی ہوگئے۔

آل انڈیا کسان سنگھرش کوآرڈینیشن کمیٹی کی اپیل پر آل انڈیا کسان سبھا کے قومی صدر اشوک دھاﺅلے، آل انڈیا کسان مہا سبھا کے ریاستی سکریٹری رامادھار سنگھ کے ساتھ ہی بائیں بازو کی جماعتوں کے لیڈران کی قیادت میں کھیگرامس، آل انڈیا پروگریسیو خواتین یونین (ایپوا)، آل انڈیا اسٹوڈینٹس ایسوسی ایشن (آئیسا)، اینوس اور آل انڈیا سینٹر فار ٹریڈ یونینس کے قریب دس ہزار لیڈران اور کارکنان نے تینوں زرعی قوانین کی مخالفت میں منگل کو یہاں تاریخی گاندھی میدان سے گورنر ہاﺅس کیلئے مارچ نکالا۔ مارچ کے ڈاک بنگلہ چوراہا پہنچتے ہی وہاں پہلے سے موجود پولیس کے جوانوں نے انہیں آگے بڑھنے سے روک دیا۔ اس پر مارچ میں شامل کسان مشتعل ہوگئے اور پولیس کے ساتھ ان کی جھڑپ ہوگئی۔

مظاہرین کے تیور دیکھتے ہوئے اور تعداد میں کم ہونے کی وجہ سے پولیس کو فوری طور پر پیچھے ہٹنا پڑا۔ کچھ دیر بعد ہی اطلاع ملنے پر بڑی تعداد میں پہنچی پولیس نے پہلے تو مشتعل کسانوں کو سمجھانے کی کوشش کی لیکن جب وہ نہیں مانے تو ان پر لاٹھی چارج کر دی۔ لاٹھی چارج کی وجہ سے کچھ دیر کیلئے افراتفری کا ماحول بن گیا۔ لاٹھی چارج اور بھاگنے کے دوان کئی مظاہرین زخمی ہو گئے۔

دریں اثناء آل انڈیا کسان مہا سبھا کے ریاستی سکریٹری رامادھار سنگھ نے دعویٰ کیاکہ مارچ میں شامل ہونے کیلئے بڑی تعداد میں کسان یہاں پہنچے۔ ٹرینوں کی آمدورفت نہیں ہونے کے باوجود پورنیہ، ارریہ، سیمانچل کے اضلاع کے ساتھ ہی مشرقی اور مغربی چمپارن، سیوان اور گوپال گنج ضلع سے کسان پہنچے۔ لوگوں سے اس تحریک کو اپنی حمایت دینے کی اپیل کی۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close