اترپردیش

مظفر نگر: جینت کی ریلی میں شرکت سے روکے گئے امروہہ کے آر ایل ڈی لیڈران

کسان، نوجوان، مزدور و عام آدمی بی جی پی کو قتدار سے باہر کرنے کا عزم کر چکا ہے: اشفاق علی خاں...........سویرے سے ہی گھروں پر پہنچی پولس

امروہہ، (سالار غازی) 
راشٹریہ لوک دل کے قومی نائب صدر نوجوان لیڈر جینت چودھری کی اپیل پر مظفر نگر میں منعقد ہوئی لوکتنتر بچاؤ ریلی میں شرکت سے روکنے کے لئے علاقائی پولس انتظامیہ کے ذریعے آر ایل ڈی کارکنان کو ان کے گھروں پر نظربند کیا گیا اسی سلسلہ میں سابق ایم ایل اے نوگاواں سادات و آر ایل ڈی اقلیتی سیل کے صوبائی صدر اشفاق علی خاں کو پولس کے ذریعے پہلے ان کے مکان پر ہی روکا گیا پھر متعلقہ کوتوالی میں بٹھایا گیا ان کے علاوہ پارٹی کے ایک اور سینیر لیڈر منویر سنگھ چکارا کو بھی علاقائی پولس نے متعلقہ کوتوالی میں روک کر رکھا دونوں ہی لیڈران نے پولس کے اس طرز عمل پر شدید ناراضگی کا اظہار کیا.

سابق رکن اسمبلی اشفاق علی خاں نے کہا کہ بی جی پی حکومت جمہوریت کو پامال کر رہی ہے بولے صوبہ کی موجودہ سرکار حسب اختلاف کی آواز کو دبانا چاہتی ہے حسب اختلاف کے ساتھ آزاد ہندوستان کی تاریخ میں وہ مظالم نہیں کئے گیے جو موجودہ سرکار کے دوران سرکار کے اشارہ پر پولس و انتظامی افسران کے ساتھ کیے جا رہے ہیں اشفاق علی کگان نے کہا کہ ہم زرکاری مظالم سے ڈر کر عوام کی آواز کو دبنے نہیں دینگے بولے راشٹریہ لوک دل کے قومی نائب صدر نوجوان لیڈر جینت چودھری نے مظفر نگر میں موجودہ حالات کے خلاف ایک ریلی کا انعقاد کیا ہے جس میں پارٹی لیڈران کو شرکت سے روکا جا رہا ہے.

اشفاق علی خاں نے مزید کہا کہ کسان نوجوان مزدور عام آدمی جاگ گیا ہے سرکار کو اقتدار سے باہر کرنے کا عزم کر چکا ہے منویر سنگھ چکارا نے بھی پولس و انتظامی افسران کی کاروائی پر سرکار کی تنقید کی بولے صوبہ جنگل راج بن چکا قانون نام کی کوئی چیز اتر پردیش میں دکھائی تک نہیں دے رہی بولے پولس کو سرکار نے جرائم پیشہ افراد کے خلاف تماشائی بنا دیا ہے جبکہ سرکار پولس سے حسب اختلاف کو ڈرانے اور دھمکانے کا کام لے رہی ہے منویر سنگھ چکارا نے کہا کہ موجودہ سرکار جی بدای عنقریب ہے.

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close