اترپردیشتازہ ترین خبریں

لوجہاد: جبراََ تبدیلی مذہب آرڈیننس کو یوگی کابینہ کی منظوری

'جبری تبدیلی مذہب کی صورت میں 1 تا 5 سال سے قید کی سزا کے ساتھ 15 ہزار روپئے کے جرمانے کی تجویز ہے۔ وہیں نابالغ اور ایس سی ایس ٹی سماج کے خواتین کی تبدیلی مذہب پر 3 تا 10 سال کی سزا کے ساتھ 25 ہزار روپئے کے جرمانے کی تجویز ہے۔

لکھنؤ، (یو این آئی)
اترپردیش کی ریاستی کابینہ نے شادی کے خاطر تبدیلی مذہب کو روکنے کے لئے منگل کو مجوزہ جبرا تبدیلی مذہب آرڈیننس کو منظوری فراہم کردی۔ کابینی وزیر سدھارتھ ناتھ سنگھ نے بتایا کہ منگل کو وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی صدارت میں ہوئی کابینہ میٹنگ میں اس مجوزہ آرڈیننس پر تبادلہ خیال کے بعد کابینہ نے اسے ہری جھنڈی فراہم کردی۔

مسٹر سدھارتھ نگر آرڈیننس کے بارے میں معلومات فراہم کرتے ہوئے بتایا کہ ‘جبری تبدیلی مذہب کی صورت میں 1 تا 5 سال سے قید کی سزا کے ساتھ 15 ہزار روپئے کے جرمانے کی تجویز ہے۔ وہیں نابالغ اور ایس سی ایس ٹی سماج کے خواتین کی تبدیلی مذہب پر 3 تا 10 سال کی سزا کے ساتھ 25 ہزار روپئے کے جرمانے کی تجویز ہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ اگر کوئی مذہب تبدیل کر کے شادی کرنا چاہتا ہے تو ایسی صورت میں اس کے لئے ضروری ہوگیا وہ دو مہینے قبل عرضی داخل کرکے ڈسٹرکٹ مجسٹریٹ سے اس کی اجازت طلب کرنی ہوگی۔ شادی سے قبل نام چھپانے پر 10سال کی سزا جبکہ بڑے پیمانے پر تبدیلی مذہب کی صورت میں 3 تا 10 سال کی سزا کے ساتھ 50 ہزار روپئے کی جرمانے کی تجویز رکھی گئی ہے۔ مسٹر سنگھ نے کہاکہ آرڈیننس خواتین کو انصاف دلانے کے لئے متعارف کرایا گیا ہے انہوں نے دعوی کیا کہ ریاست میں تقریبا 100 ایسے واقعات رونما ہوئے ہیں جس میں شادی کے بعد عورت کو تبدیلی مذہب کے لئے مجبور کیا گیا کیونکہ شادی سے پہلے شوہر نے اپنا اصلی نام کو مخفی رکھا تھا۔

قابل ذکر ہے کہ وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ نے حالیہ دنوں میں ہی ایک عوامی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کہا تھا ‘ریاستی حکومت لو جہاد پر بھی کام کررہی ہے۔ ہم اس پر ایک سخت قانون بنائیں گے۔ انہوں نے انتباہ دیتے ہوئے کہا تھا جو لوگ اپنی شناخت مخفی رکھتے ہوئے بہن بیٹوں کے آبرو کے ساتھ کھلواڑ کرتے ہوئے۔ اگر آپ نے اپنی اطوار کو تبدیل نہیں کیا تو آپ کی ‘رام رام ستیہ’ سفر کا آغاز ہو جائے گا۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close