اترپردیشتازہ ترین خبریں

شادی کی تقریب کے لئے پولیس اجازت کی ضرورت نہیں: یوگی آدتیہ ناتھ

لکھنؤ، (یو این آئی)
ریاستی راجدھانی لکھنؤ میں دفعہ 144 کے نفاذ کے ساتھ شادی کی تقریبات کے لئے پولیس کے ذریعہ اجازت طلب کرنے کی لازمیت کے بعد اترپردیش کے وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ (Yogi Adityanath) نے جمعرات کو واضح کیا کہ شادی تقریبات کے لئے کسی بھی قسم کی اجازت لینے کی ضرورت نہیں ہے ساتھ ہی انہوں نے عوام کو ہراساں کرنے کے معاملے میں پولیس کو تنبیہ بھی کی۔

وزیر اعلی نے کہا کہ شادی تقریب کے لئے اجازت طلب کرنے کے نام پر ہراسانی کے سلسلے میں پولیس کی جواب دہی طے کی جائے گی۔ شادی کے لئے کسی بھی قسم کی اجازت طلب کرنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے ہاں شادی میں کووڈ کے رہنما ہدایات پر عملدآمد ضروری ہے۔ وزیر اعلی نے شادی تقریبات میں شرکاء کی محدود تعداد پر بھی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ بند مقامات پر 100 افراد جبکہ کھلے مقام میں وہاں کی اہلیت کی 40 فیصدی افراد شریک ہو سکیں گے۔ اس تعداد میں بینڈ پارٹی، ڈی جے اور دیگر خدمت گاروں و کیٹرنگ افراد کو شمار نہیں کیا جائے گا۔

انہوں نے پولیس کو تنبیہ کرتے ہوئے کہا کہ شادیوں میں کووڈ گائیڈ لائنس کے نام پر عوام کو ہراساں کرنے والے پولیس اہلکار کے خلاف سخت کاروائی ہوگی۔ کوئی بھی جو شادیوں میں بینڈ پارٹی، ڈی جے وغیرہ میں روکاوٹ ڈالے گا وہ سزا کا مستحق ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ پولیس کے صرف اتنی ذمہ داری ہے کہ وہ عوام کو کووڈ پروٹوکول وگائیڈ لائنس کے بارے میں آگاہ کریں اور اس ضمن میں انہیں کسی بھی طرح سے ہراساں نہ کریں۔ گذشتہ کل لکھنؤ پولیس نے نوٹس جاری کرتے ہوئے عوام کو ہدایت دی تھی کہ شادی تقریب کی انعقاد سے پہلے پولیس کی اجازت لینا ضروری ہوگا۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close