تازہ ترین خبریںدلی نامہ

حوض قاضی تنازعہ میں 2 افراد گرفتار

پرانی دہلی حوض قاضی علاقے میں معمولی جھگڑے کے بعدمندر میں توڑ پھوڑ کرنے کے معاملے میں دہلی پولیس نےایک نابالغ اور دو افراد کو گرفتار کیا ہے۔
ذرائع نے بتایا کہ پارکنگ تنازعہ سے دو فرقوں کے درمیان ماحول میں کشیدگی اور ایک مذہبی مقام میں توڑ پھوڑ کے معاملے میں پولیس نے دو افراد کو گرفتار کیا ہے جبکہ ایک نابالغ کو بھی حراست میں لیا گیا ہے۔ حالانکہ پولیس ذرائع کی جانب سے گرفتار ی کی تصدیق نہیں کی گئی۔

حوض قاضی علاقے میں اتوار کی رات ہونے والے تنازعہ کے بعد پیر کو پورے دن کشیدگی اور تناؤ کی صورتحال رہی۔ لاء اینڈ آرڈرقائم رکھنے کے لیے آج بھی بڑی تعداد میں پولیس دستے کو تعینات کیا گیا ہے۔ دونوں فرقوں کے افرادگذشتہ شام امن و شانتی بنانے کے لیے سامنے آئے اور انہوں نے عوام کو امن بحال رکھنے کی اپیل کی تھی۔
فتح پوری مسجد کے شاہی امام مفتی محمد مکرم نے اپیل کی تھی کہ مذہبی مقام کو جو نقصان ہوا ، مسلمان ہی ٹھیک کروائیں۔

مرکزی وزیر صحت اور چاندنی چوک سے رکن پارلیمنٹ ہرش وردھن نے آج صبح تناؤ والے علاقے کا دورہ کرکے صورتحال کا جائزہ لیا۔ ڈاکٹر ہرش وردھن نے ٹویٹ کیا،’ صبح چاندنی چوک کے لال کواں واقع قدیم مندر کا در شن کیا۔ مندر میں ہونے والی توڑ پھوڑ سے تکلیف ہوئی ہے۔ میں نے مقامی افراد سے بات کرکے تنازعہ کی پوری معلومات حاصل کی اور انھیں یقین دہانی کرائی کہ مجرموں کو بخشا نہیں جائے گا‘۔

انہوں نے ایک دوسرے ٹویٹ میں کہا کہ پرانی درگا مندر میں درشن کے بعد مقامی بااثر باشندوں سے ملاقات کرکے حوض قاضی تھانے میں پولیس افسران کے ساتھ میٹنگ کی اور پورے تنازعہ کی تفصیلی معلومات لی۔ علاقے میں کوئی دیگر ناخوشگوار واقعہ نہیں پیش آیا۔ اس مقصد سے سکیورٹی انتظامات کا جائزہ لیا۔
مرکزی وزیر صحت کے ساتھ دورے پر جانے والے سینٹرل دہلی کے ڈپٹی کمشنر آف پولیس مندیپ سنگھ رندھوا اور دیگر پولیس اہلکاروں کو انہوں نے مندر میں توڑ پھوڑ کرنے والے غیر سماجی عناصر کے خلاف کاروائی کرنے کی ہدایت دی ہے۔ پولیس نے یقین دہانی کرائی ہے کہ خاطیوں کو جلد از جلد پکڑ لیا جائےگا۔ ڈاکٹر ہرش وردھن نے ہر کسی سے امن و سکون قائم رکھنے کی اپیل کی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close