اپنا دیشتازہ ترین خبریں

’جموں وکشمیر، لیہ اور کارگل میں تشکیل دیا جائے گا وقف بورڈ‘

وقف املاک کے ڈیجیٹائزیشن اور جیو ٹیگنگ/جی پی ایس میپنگ کا کام بھی شروع کر دیا گیا ہے جو جلد ہی مکمل کر لیا جائے گا

نئی دہلی (امیر امروہوی)
مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے کہاکہ جلد ہی جموں وکشمیر اور لیہہ کارگل میں وقف بورڈ تشکیل دیا جائے گا اس کی کارروائی شروع کر دی گئی ہے۔

آج نئی دہلی میں مرکزی وقف کونسل کے اجلاس کی صدارت کرتے مختار عباس نقوی نے کہاکہ وقف املاک کو جموں و کشمیر اور لیہہ کارگل میں پہلی مرتبہ آر ٹیکل 370 کے خاتمے اور آزادی کے بعد وقف بورڈ کے ذریعے تشکیل دیئے جانے کو یقینی بنایا جائے گا اور ان املاک کے سماجی، سیاسی، اقتصادی اور تعلیمی سرگرمیوں کے استعمال کے لئے "پردھان منتری جن وِکاس کاریہ کرم” (پی ایم جے وی کے) کے تحت مکمل تعاون فراہم کیا جائے گا۔

انہوں نے کہاکہ جموں و کشمیر اور لیہہ کارگل میں ہزاروں وقف املاک ہیں جن کے رجسٹریشن کا عمل جاری ہے۔ وقف املاک کے ڈیجیٹا ئزیشن اور جیو ٹیگنگ / جی پی ایس میپنگ کا کام بھی شروع کردیا گیا ہے جو جلد ہی مکمل کر لیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ آج کی مرکزی وقف کونسل کے اجلاس میں متعدد ریاستوں میں وقف املاک میں گول مال اور وقف مافیاؤں کے قبضے پر سنجیدہ موقف اختیار کرتے ہوئے ریاستی حکومتوں سے کہا گیا ہے کہ وہ وقف املاک کے تحفظ کے لئے ایسے وقف مافیاؤں کے خلاف کارروائی کو یقینی بنائیں تاکہ وقف املاک کی حفاظت اور بہتر مصرف ممکن ہو سکے۔ مرکزی وقف کونسل کی ٹیم اس سلسلے میں ان ریاستوں کا دورہ کرے گی۔

انہوں نے کہا کہ وقف املاک پر مرکزی سرکار کے ذریعہ اسکول، کالج، آئی ٹی آئی، گرلز ہاسٹل، رہائشی اسکول اور کوشل وِکاس مراکز، جموں وکشمیر میں وقف املاک کے ذریعہ کئی سماجی مراکز، "سدبھاؤ منڈپ”، "ہنرہب”، اسپتال، پیشہ ورانہ مراکز، کامن سروس سینٹر وغیرہ کی بڑے پیمانے پر تعمیرکی جائے گی۔ ان بنیادی سہولیات کے ڈھانچے کی تعمیر سے سماج کے ضرورت مندوں خصوصا لڑکیوں کی تعلیم کے لئے بہتر سہولیات اور نوجوانوں کو روزگار کے مواقع میسر ہوں گے۔ انہوں نے کہاکہ آزادی کے بعد پہلی مرتبہ وزیر اعظم نریندر مودی کی سربراہی والی حکومت نے ملک بھر میں وقف املاک پر اسکول، کالج، اسپتال، کمیونٹی سینٹر وغیرہ کی تعمیر کے لئے "پردھان منتری جن وکاس کاریہ کرم ” (پی ایم جے وی کے) کے تحت ا فیصد مالی اعانت کی ہے۔

مختار عباس نقوی نے کہاکہ وزیر اعظم نریندر مودی کی حکومت نے ملک کے صرف 90 اضلاع تک محدود ترقیاتی اسکیموں کی توسیع "پردھان منتری جن وکاس کاریہ کرم” کے تحت 803 اضلاع، 870 بلاکس، 133 شہروں، ہزاروں دیہاتوں میں کر دیا ہے۔ ان اسکیموں کا فائدہ معاشرے کے تمام طبقات کو ہو رہا ہے۔ انہوں نے مزیدکہاکہ ملک بھر میں رجسٹرڈ وقف املاک تقریباً 6 لاکھ 64 ہزار ہیں۔ تمام 32 ریاستی وقف بورڈوں کے 100 فیصد ڈیجیٹا ئزیشن کا کام مکمل ہو چکا ہے۔ بڑے پیمانے پر وقف املاک کی جیوٹیگنگ/جی پی ایس میپنگ جنگی بنیادوں پر جاری ہے۔ 32 ریاستی وقف بورڈوں کو ویڈیو کانفرنسنگ کی سہولیات فراہم کی گئیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close