تازہ ترین خبریںکھیل کھلاڑی

انڈیا بمقابلہ آسٹریلیا: پہلے ٹی۔20 میں بلند حوصلوں کے ساتھ اترے گی ٹیم انڈیا

کینبرا، (یو این آئی)
ہندوستانی ٹیم (Team India) تیسرے ون ڈے میں شاندار جیت سے پرجوش ہوکر آسٹریلیا (Australia) کے خلاف تین میچوں کی ٹی ٹوئنٹی سیریز کے جمعہ کے روز ہونے والے پہلے مقابلے میں بلند حوصلے کے ساتھ اترے گی۔

ہندوستان نے سڈنی میں پہلے دو ون ڈے 66 اور 51 رن سے گنوائے تھے لیکن کینبرا میں تیسرے مقابلے میں 13 رن کی جیت کے ساتھ شاندار واپسی کی۔ کینبرا کے مانوکا اوول میدان میں آسٹریلیا کو اس طرح پہلی مرتبہ شکست کا سامنا کرنا پڑا۔ ہندوستانی ٹیم اب ٹی ٹونٹی سیریز میں بھی اس کارکردگی کو برقرار رکھنا چاہے گی، جس کا پہلا میچ کینبرا کے مانوکا اوول گراؤنڈ میں ہونا ہے۔ ہندوستانی کپتان وراٹ کوہلی (Virat Kohli) نے تیسرے ون ڈے میں جیت کے بعد کہا کہ وہ اس فارم کو آگے بھی برقرار رکھیں گے۔

ون ڈے سیریز کے پہلے دو میچوں میں ہندوستانی ٹیم کی کارکردگی مایوس کن رہی اور وہ متاثر کرنے میں ناکام رہی تھی لیکن تیسرے میچ میں ٹیم انڈیا شاندار بلے بازی اور گیند بازی سے کلین سوئپ سے بچ گئی۔ ہندوستانی ٹیم کو ٹی ٹوئنٹی (T20) سیریز میں اس فارم کو برقرار رکھنا ہوگا اور آسٹریلیائی گیندبازوں کو قابو میں کرتے ہوئے جیت کے ساتھ ٹی ٹوئنٹی کا آغاز کرنا ہوگا۔ ہندوستانی ٹیم نے واشنگٹن سندر اور دیپک چاہر کو ٹی 20 کے لئے ٹیم میں شامل کیا ہے۔ جبکہ شکھر دھون (Shikhar Dhawan)، وراٹ کوہلی، مینک اگروال، لوکیش راہل (KL Rahul) اور شریس ایر (Shreyas Iyer) پر بلے بازی کا ذمہ ہوگا اور ممکن ہے کہ دھون کے ہمراہ راہل اوپننگ کی ذمہ داری سبنھالیں ایسے میں مینک کا آخری الیون میں شامل ہونا مشکل ہو جائے گا۔

اس سال کے شروع میں ہندوستان نے نیوزی لینڈ کے ساتھ پانچ میچوں کی ٹی ٹونٹی سیریز کھیلی تھی جس میں راہل نے شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا اور ٹیم کو پانچ۔صفر سے کلین سوئپ کرانے میں کلیدی کردار ادا کیا تھا۔ راہل نے حال ہی میں یو اے ای میں آئی پی ایل کے 13 ویں سیزن میں بھی بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا اور وہ ٹورنامنٹ میں سب سے زیادہ اسکور بنانے والے کھلاڑی تھے۔ راہل سےایک بار پھر ایسی کارکردگی کی توقع رہے گی اور دھون اور راہل پر ٹیم کو مضبوط شروعات دلانے کی ذمہ داری ہوگی۔ کپتان وراٹ نے آسٹریلیا کے خلاف دوسرے میچ میں 89 اور تیسرے ون ڈے میں 63 رنز بنائے تھے۔ انہیں یہ فارم ٹی ٹوئنٹی میں بھی برقرار رکھنی ہوگی۔

ہندوستان ٹیم کے مڈل آرڈر میں، شریس ایر کو منیش پانڈے (Manish Pandey) پر ترجیح دی جاسکتی ہے جبکہ آل راونڈر کے شعبے میں ہاردک پانڈیا (Hardik Pandya) اور رویندر جڈیجہ (Ravindra Jadeja) ذمہ داری سنبھالیں گے جنہوں نے تیسرے ون ڈے میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا تھا۔ پانڈیا اور جڈیجا دونوں فارم میں ہیں اور ان دونوں سے ایک بار پھر بہترین کارکردگی کی امید ہوگی۔ ٹی 20 کے لئے ہندوستانی ٹیم میں شامل واشنگٹن کو چھٹے گیندبازکے طور پر میدان میں اتارا جاسکتا ہے۔ ٹیم کی گیندبازی ون ڈے سیریز میں فلاپ ثابت ہوئی اور گیندبازوں کو پرانی غلطیوں سے سبق حاصل کرکے اپنی کارکردگی میں بہتری لانے کی ضرورت ہے۔ تیزگیندبازی کی ذمہ داری محمد شامی، جسپریت بمراہ پر ہوگی۔ شامی ٹیم میں واحد ایسے گیندباز تھے جنہوں نے دوسرے گیندبازوں کے مقابلے بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ ان دونوں گیندبازوں کے علاوہ نودیپ سینی اور دیپک چاہر کو بھی موقع دیا جا سکتا ہے۔ اسپن کے شعبے میں لیگ اسپنر یوزویندر چہل کا مورچہ سنبھالیں گے۔

دوسری طرف آسٹریلیا ون ڈے سیریز میں جیت کے بعد ٹی ٹوئنٹی کی سیریز بھی اپنے نام کرنے کی کوشش کرے گی حالانکہ ٹیم کے جارح بلے باز ڈیوڈ وارنر زخمی ہونے کی وجہ سے ٹی ٹوئنٹی سیریز سے باہر ہوگئے ہیں۔ ان کی جگہ ٹیم میں ڈی ارشی شارٹ کو شامل کیا گیا ہے۔ ہندوستان کے گیندبازوں کو آسٹریلیا کی مضبوط بیٹنگ آرڈر پر قابو پانا ہوگا، جنھوں نے ون ڈے سیریز میں کافی پریشان کیا تھا۔ آسٹریلیائی ٹیم کے لئے بڑی اننگز کے ذمہ داری فنچ، اسٹیون اسمتھ، گلین میکسویل اور مارکس اسٹوئنس پر ہوگی۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close