تازہ ترین خبریںکھیل کھلاڑی

انڈیا بمقابلہ آسٹریلیا: سیریز کا پہلا ون ڈے کل، شائقین کی میدان پر واپسی

سڈنی، (یو این آئی)
ہندوستانی کرکٹ ٹیم کورونا کے بحران کے وقت اپنی پہلی باہمی سیریز کھیلے گی اور ان کا پہلا مقابلہ آسٹریلیا کے خلاف سڈنی گراؤنڈ میں جمعہ کو (کل) ہوگا۔ اس پہلے ون ڈے کے ساتھ ہی اسٹیڈیم میں شائقین کی واپسی ہوگی۔ کورونا وائرس کے پیش نظر، اسٹیڈیم میں شائقین کی موجودگی پر کچھ عرصے کے لئے پابندی عائد کردی گئی تھی، لیکن ہندوستان اور آسٹریلیا کے مابین سڈنی کرکٹ گراؤنڈ میں پہلے ون ڈے سے مداحوں کی میدان میں واپسی ہوگی۔ اسٹیڈیم میں 50 فیصد ناظرین کو میچ دیکھنے کی اجازت دی گئی ہے۔
۔

ہندوستان نے 19-2018 میں آسٹریلیائی سرزمین پر تین ون ڈے میچوں کی سیریز دو۔ایک سے جیتی تھی لیکن اس بار حالات بالکل مختلف ہیں اور آسٹریلیائی ٹیم آخری بار کے مقابلے میں زیادہ مضبوط نظرآرہی ہے۔ یہ سیریز آئی سی سی ون ڈے ورلڈ کپ سپر لیگ کا حصہ ہے جس میں ہر میچ جیتنے پر پوائنٹ ملیں گے۔ اس سپر لیگ کے تحت یہ ہندوستان کی پہلی ون ڈے سیریز ہے۔ ہندوستان کو 2023 میں 50 اووروں کے ورلڈ کپ کی میزبانی کرنی ہے۔ ورلڈکپ کے لئے براہ راست کوالیفائی کرنے والی ٹیموں کا فیصلہ اس لیگ کی بنیاد پر ہو گا۔

ہندوستانی ٹیم کے بیشتر کھلاڑی اس مہینے 10 نومبر کو متحدہ عرب امارات میں ختم ہوئی آئی پی ایل کا حصہ تھے اور ٹیم کے تمام کھلاڑی براہ راست دبئی سے سڈنی پہنچے تھے۔ یہاں ٹیم 14 دن کی کوارنٹین میں رہنے کے بعد کورونا میں اپنے پہلے بین الاقوامی میچ کے لئے تیار ہوچکی ہے۔ دوسری جانب آسٹریلیائی ٹیم نے آئی پی ایل سے قبل انگلینڈ میں تین۔تین ٹی 20 اور ون ڈے سیریز کھیلی تھی۔ آسٹریلیا کے سپر لیگ میں تین میچوں میں سے 20 پوائنٹس ہیں جب کہ ہندوستان نے اپنا کھاتہ کھولنا ہے۔ وراٹ کوہلی کی قیادت میں ٹیم انڈیا کے لئے ون ڈے سیریز کے لئے صحیح تال میل کا انتخاب کرنا ایک بہت بڑا چیلنج ہے۔

محدود اوورز کے نائب کپتان روہت شرما کو ہیمسٹرنگ انجری کی وجہ سے ون ڈے اور ٹی ٹونٹی سیریز سے آرام دیا گیا ہے۔ ان کی عدم موجودگی میں شیکھر دھون کے ساتھی کی حیثیت سے لوکیش راہل اوپننگ میں اترسکتے ہیں۔ راہل نے آئی پی ایل 13 میں کنگز الیون پنجاب کی طرف سے کھیلتے ہوئے ٹورنامنٹ میں سب سے زیادہ رنز بنائے تھے۔ راہل رواں سال کے شروع میں آسٹریلیا کے خلاف ہندوستان کی ون ڈے سیریز میں مڈل آرڈر میں اترے تھے اور پانچویں نمبر پر بلے بازی کی تھی لیکن روہت کے باہر ہونے کی وجہ سے انہیں اوپننگ میں موقع دیا جاسکتا ہے جس سے ہندوستان سیریز کے پہلے میچ میں اچھی شروعات کرے۔ خود راہل نے کہا ہے کہ وہ ٹیم کی ضرورت کے مطابق کسی بھی نمبر پر کھیلنے کو تیار ہیں۔

ٹیم میں افتتاحی دعویدار کے طور پر مینک اگروال اور سنجو سیمسن بھی شامل ہیں جنہوں نے آئی پی ایل میں شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کیا۔ راہل اور سیمسن دونوں وکٹ کیپر ہیں لیکن وکٹ کیپر کے طور پر ٹیم کی پہلی پسند راہل ہیں۔ کپتان وراٹ تیسرے نمبر پر کھیلنے اتریں گے۔ وراٹ اس سیریز میں 12000 رنز مکمل کرنے کاریکارڈ حاصل کرسکتے ہیں۔ ان کے اکاؤنٹ میں 248 میچوں میں 11867 رنز ہیں۔ روہت کے باہر ہونے سے محدود اوور میں وراٹ کی ذمہ داری زیادہ بڑھ جائے گی۔

اپنی کپتانی میں دہلی کیپٹلس کو آئی پی ایل کے فائنل تک لے جانے والے شریس ایر چوتھے نمبر پر رہیں گے۔ منیش پانڈے اور شبھمان گل میں سے کوئی بلے باز پانچویں نمبر پر کھیلے گا۔ ہاردک پانڈیا چھٹے نمبر پر جبکہ نئے فنیشر لیفٹ آرم اسپن آل راونڈر رویندر جڈیجہ ساتویں نمبر پر رہیں گے۔ اسپنر کی جگہ کے لئے لیگ اسپنر یوزویندر چہل کو کلدیپ یادو پر ترجیح ملے گی۔ تیزگیندبازی کا ذمہ جسپریت بمرا، محمد شامی اور نودیپ سینی پر رہے گا۔ آخری الیون میں جگہ بنانے کے لئے سینی کو شاردل ٹھاکر سے چیلنج مل سکتا ہے۔ دوسری طرف آسٹریلیائی ٹیم گزشتہ بار کے مقابلے میں اس بار مضبوط نظر آ رہی ہے۔ جارح اوپنر ڈیوڈ وارنر اور تجربہ کار بلے باز اسٹیون اسمتھ ٹیم کی بلے بازی کو مضبوطی فراہم کریں گے۔ وارنر اور اسمتھ کے ساتھ کپتان آرون فنچ، تیزگیندباز پیٹ کمنز، جوز ہیزل ووڈ، گلین میکسویل، مارکس اسٹونیس اور لیگ اسپنر ایڈم جمپا نےآئی پی ایل میں کھیلا اور یہ تمام کھلاڑی اچھے فارم میں نظر آرہے ہیں۔

آسٹریلیائی تیزگیندباز پیٹ کمنس، مشل اسٹارک، اینڈریو ٹائی اور جوش ہیزل ووڈ ہندوستانی بلے بازوں کا سخت امتحان لینے کے لئے تیار ہیں۔ اسپن کے شعبے میں، بائیں ہاتھ کے اسپنر اشٹن ایگر اور لیگ اسپنر ایڈم جمپا کے مابین مقابلہ ہوگا۔ آل راؤنڈر کے کردار کے لئے گلین میکسویل اور مارکس اسٹونیس اپنے دعوی پیش کریں گے۔ اسٹونیس آئی پی ایل میں کھیلے تھے اور بہت کامیاب رہی تھے جبکہ انگلینڈ کے خلاف آخری ون ڈے میں سنچری بنانے والے میکس ویل نے آئی پی ایل میں کافی جدوجہد کی تھی۔

بلےبازی کا ذمہ کپتان فنچ ، وارنر اور اسمتھ کے ساتھ سلامی بلے باز مارنس لابوشین پر رہے گا۔ لابوشین تاہم انگلینڈ کے خلاف تین ون ڈے میچوں میں کوئی بڑا اسکور نہیں بنا سکے تھے لیکن ان کے نام 10 ون ڈے میچوں میں ایک سنچری اور دو نصف سنچریاں درج ہیں۔ اس سیریز کے ساتھ ہی ہندوستان اور آسٹریلیا کی ون ڈے تاریخ میں 40 سال مکمل ہو رہے ہیں اور 2023 ورلڈ کپ کے پیش نظر دونوں ٹیمیں سیریز میں زیادہ سے زیادہ پوائنٹس جمع کرنے پر نگاہ رکھیں گی۔ سیریز کا دوسرا میچ 29 نومبر کو سڈنی میں کھیلا جائے گا جبکہ تیسرا میچ 2 دسمبر کو کینبرا میں کھیلا جائے گا۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close