Khabar Mantra
اپنا دیشتازہ ترین خبریں

انتخابی نتائج و رجحانات: بی جے پی کو دو ریاستوں میں ہار کا سامنا، مدھیہ پردیش میں پل پل بدلتا رجحان

پانچ اسمبلیوں کے انتخابات میں خاص طور پر راجستھان، مدھیہ پردیش اور چھتیس گڑھ کے جو اب تک جو غیر معلنہ نتائج سامنے آئے ہیں وہ کانگریس اور بی جے پی دونوں کے لئے حیران کن ہیں۔

بی جے پی کو راجستھان اور چھتیس گڑھ میں جہاں شکست کا سامنا ہے وہیں مدھیہ پردیش میں ایک دوسرے کی طرف جھکتا ہوا پلہ گنتی کےحتمی مرحلے میں کانگریس کی طرف نظر آرہا ہے۔ 2014 کے بعد کانگریس کی یہ بہتریں کارکردگی ہے جو اس نے پارٹی کے نومنتخب صدر راہل گاندھی کی قیادت میں دکھائی ہے۔ البتہ تلنگانہ میں ٹی ڈی ُی کے ساتھ وسیع تر اتحاد کے باوجود کانگریس کوئی نمایاں کارکردگی نہیں دکھا سکی۔ وہاں اب تک کے رجحان کے مطابق اسے کوئی پندرہ سیٹوں کا نقصان ہو رہا ہے۔ تلنگانہ میں بی جے پی کو بھی بمشکل ایک سیٹ پر کامیابی مل سکتی ہے۔ 2014 میں تلنگانہ میں بی جے نے اسمبلی کی پانچ سیٹیں جیتی تھیں۔

کانگریس کے لئے اسمبلی انتخابات کا یہ مرحلہ جس میں اسے میزورم میں شکست کا سامنا کر نا پڑ رہا ہے اس لحاظ سے اہم ہے کہ 2014 سے وہ مسلسل اسمبلی انتخابات میں خسارے سے دوچار رہی اور صرف دو ریاستیں ہی اس کے پاس رہ گئی تھیں۔ کانگریس کے صدر دفتر میں جہاں انتخابی نتائج پر جشن کا ماحول ہے وہیں پانچوں ریاستوں کے اسمبلی انتخابات کے ووٹوں کی گنتی کے رجحانوں میں بی جےپی کے پیچھے نظر آنے کے باوجود مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے کہا کہ رجحان بھلے ہی مودی حکومت کے خلاف ہوں لیکن عوامی حمایت ان کے حق میں ہے، کیونکہ الیکشن کے ان نتائج میں ریاستی حکومتوں کی کارکردگی کا عمل دخل ہے۔

نتائج اور رجحانات کے موجودہ مر حلے میں مدھیہ پردیش میں کانگریس 113، بی جے پی 109، بہوجن سماج پارٹی پدو اور دیگر سات سیٹوں پر آگے چل رہے ہیں۔ راجستھان میں کانگریس 100اور بی جے پی 873سیٹوں پر سبقت حاصل کئے ہوئے ہے۔ بی ایس پی چھ سیٹوں پر آگے ہے۔تلنگانہ میں ٹی آر ایس 88 گانگریس 21 بی جے پی دو دیگر9 سیٹوں پر آگے ہیں۔ چھتیس گڑھ میں کانگریس65 بی جے پی 17بی ایس پی سات سیٹوں پر آگے ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close