Khabar Mantra
اترپردیشتازہ ترین خبریں

اترپردیش: آخری مرحلے میں 26 فیصدی امیدواروں کا مجرمانہ ریکارڈ

اترپردیش کے لوک سبھا انتخابات کے ساتویں اور آخری مرحلے میں مجموعی امیدواروں میں سے 26 فیصد امیدوار مجرمانہ شبیہ والے ہیں۔ ساتویں مرحلے میں اترپردیش کے مہاراج گنج، کشی نگر، وارانسی، گورکھپور، بانسگاؤں، غازی پور، سلیم پور، مرزا پور، بلیا، گھوسی، دیوریا، چندولی اور رابرٹس گنج میں 19 مئی کو ووٹ ڈالے جائیں گے۔ ان سیٹیوں پر عتیق احمد، اجے رائے اور اتل کمار سنگھ سمیت 26 فیصدی امیدواوں کے خلاف مقدمے درج ہیں۔

اعداد وشما ر کے مطابق سال 2014 کے لوک سبھا انتخابات میں 19 فیصدی داغی امیدوار انتخابی میدان میں تھے جبکہ 2019 کے انتخابات میں یہ تعداد بڑھ کر 26 فیصد ہوگئی اس میں سے 22 فیصد ی امیدواروں نے اپنے خلاف سنگین قسم کے مجرمانہ معاملہ ہونے کو قبول کیا ہے۔

آخری مرحلے میں 26 فیصدی امیدواروں کے خلاف مجرمانہ مقدمے میں ہیں جن میں سے 22 فیصدی نے اپنے خلاف سنگین قسم کے مقدمے درج ہونے کا اعتراف کیا ہے۔ اس ضمن میں ڈان عتیق احمد کے خلاف 59 مقدمے ہیں جو کہ آزاد امیدوار کی حیثیت سے وارانسی سے انتخابی میدان میں تھے لیکن آخری وقت میں انہوں نے الیکشن نہ لڑنےکا فیصلہ کیا ہے۔ وہیں گھوسی سے بی ایس پی امیدوا ر اتل رائے کے خلاف 13 مقدمے ہیں ۔ رائے اس وقت ایک ریب کیس میں گرفتاری کے خوف سے مفرور چل رہے ہیں۔وارانسی سے کانگریس امیدوار اجے رائے کے خلاف 8 مقدمے درج ہیں۔

کروڑ پتی امیدواروں کی بات کریں تو اس فہرست میں مہاراج گنج سے بی جے پی کے پنکج چودھری 37 کروڑ کی ملکیت کے ساتھ سب سے مالدا ہیں۔ جبکہ کشی نگر سے کانگریس امیدوار آر پی این سنگھ 29 کروڑ کی ملکیت کے ساتھ دوسرے نمبر پر ہیں۔ جب کہ 25 کروڑ کی ملکیت کے ساتھ آزاد امیدوار عتیق احمد تیسرے نمبر پر ہیں۔

سترہوں لوک سبھا میں اترپردیش کی 80 لوک سبھا سیٹوں پر کل 979 امیدواروں میں سے 958 کے حلف ناموں کا جائزہ لیا گیا جس میں سے 220 امیدواروں نے اپنے خلاف مجرمانہ ریکارڈ کو قبول کیا ہے۔ جو 23 فیصدی ہے ان میں سے 181 امیدواروں نے سنگین مجرمانہ مقدمے کا اعتراف کیا ہے جو کہ 19 فیصدی ہے۔ یو پی میں مجموعی امیدواروں میں سے کروڑ پتی امیدوار کی تعداد 358 یا 37 فیصدی ہے۔یوپی میں امیدواروں کی اوسط دولت 4.79 کروڑ روپئے ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close