اپنا دیشتازہ ترین خبریں

سی بی آئی کورٹ کے فیصلہ کو ہائی کورٹ میں کریں گے چیلنج: ظفریاب جیلانی

لکھنؤ، (یو این آئی)
آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ کے رکن ظفر یاب جیلانی نے بابر مسجد انہدام معاملے میں سی بی آئی کی خصوصی عدالت کے ذریعہ سنائے گئے فیصلے سے عدم اتفاق کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ اجودھیا کے متاثر اس کے خلاف الہ آباد ہائی کورٹ کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے۔

مسٹر جیلانی نے یو این آئی سے بات چیت میں کہا’ہم سی بی آئی کورٹ کے فیصلے سے اتفاق نہیں رکھتے۔ یہ فیصلہ قانون کے خلاف ہے۔ ہم اس فیصلے کو ہائی کورٹ میں چیلنج دیں گے۔ اس حادثے کے چسم دید گواہ حاضی محبوب اور حاجی اقبال ی طرف سے ہم نے عدالت کو ایک عرضی دی تھی۔ یہ دونوں اجودھیا کے رہنے والے ہیں۔اس حادثے میں ان کے مکان جلے تھے اور دونوں اس مقدمے میں گواہ بھی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ابھی یہ دو نام ہمارے پاس ہیں اور اگر ضرورت پڑی تو پرسنل لا ءبورڈ یا بابری مسجد ایکشن کمیٹی بھی اس معاملے کو چیلنج دے گی کیونکہ سجد گرائی گئی ہے اور اس وجہ سے ہم بھی متاثرین میں شامل ہیں۔ ورنا پرسنل بورڈ ان دونوں متاثرین کے معاملے کی پریوی کرے گا۔ حالانکہ اس معاملے میں آخری فیصلہ بورڈ کی میٹنگ کے بعد کیا جائےگا۔قابل ذکر ہے کہ اجودھیا میں بابری مسجد معاملے میں سی بی آئی کی خصوصی عدالت نے سبھی ملزمین کو ثبوت کی کمی میں بری کیا ہے۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close