تازہ ترین خبریںدلی نامہ

دہلی اسمبلی کی پیس اینڈ ہارمنی کمیٹی نے فیس بک انڈیا کے ایم ڈی کو بھیجا نوٹس

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
ہیٹ اسپیچ سے فیس بک کے سوشل میڈیا پلیٹ فارم سے نفرت پھیلانے کے معاملے میں دہلی اسمبلی کی امن و ہم آہنگی کمیٹی کی جانب سے فیس بک انڈیا کے نائب صدر اور منیجنگ ڈائریکٹر اجیت موہن کے پیش نہ ہونے پر دہلی اسمبلی کی امن و ہم آہنگی کمیٹی نے فیس بک انڈیا کے نائب صدر اور منیجنگ ڈائریکٹر اجیت موہن کو ایک نیا نوٹس بھجوایا ہے جس میں انہیں 23 ستمبر کو ہیٹ اسپیچ کیس میں پیش ہونے کو کہا گیا ہے۔

کمیٹی کا کہنا ہے کہ اگر اس بار اجیت موہن پیش نہیں ہوئے تو بھی اسے آئین کے ذریعہ بنائی گئی کمیٹی کے قواعد کی خلاف ورزی اور توہین سمجھا جائے گا۔ کمیٹی اس سے پہلے بھی دو بار اجیت موہن کو نوٹس دے چکی ہے، لیکن وہ پیش نہیں کی۔ فیس بک کا کہنا ہے کہ ملک کی پارلیمنٹ میں بھی اس طرح کی تفتیش جاری ہے اور انہوں نے اس کا جواب پارلیمنٹ میں دیا ہے۔

امن ہم آہنگی کمیٹی کے چیئرمین راگھو چڈھا نے کہا ہے کہ پارلیمانی کمیٹی نفرت انگیز تقریر (ہیٹ اسپیچ) کے معاملے پر کوئی تحقیقات نہیں کر رہی ہے، یہ تحقیقات اس سے مختلف ہیں اور فیس بک انڈیا کے نمائندے کو اس کمیٹی کے سامنے پیش ہونا ہی پڑے گا۔

واضح رہے کہ دہلی میں ہوئے فرقہ وارانہ فسادات میں ہیٹ اسپیچ معاملے میں دہلی اسمبلی کی پیس اینڈ ہارمنی کمیٹی کی تحقیقات جاری ہے، جس میں یہ انکشاف ہوا ہے اور شواہد ملے ہیں کہ فیس بک جیسے سوشل میڈیا کے بڑے پلیٹ فارم کے ذرائع کا استعمال کرکے ملک میں نفرت پھیلانے کام انجام دیا جاتا رہا، لیکن فیس بک نے اس نفرت کو پھیلنے سے روکنے میں کوئی رول ادا نہیں کیا ہے۔ وہیں بھی بتا دیں کہ فیس بک کے مالک مارک زکربرک نے بھی دہلی فسادات سے قبل بی جے پی لیڈر کپل مشرا کی اشتعال انگیز تقریر پر اعتراض کیا تھا۔ فیس بک کے نفرت پھیلائے جانے پر دہلی اسمبلی کی پیس اینڈ ہارمنی کمیٹی نے فیس بک انڈیا کے نائب صدر اور منیجنگ ڈائریکٹر اجیت موہن کو طلب کیا تھا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close