اپنا دیشتازہ ترین خبریں

کشمیر میں امن کی بحالی کیلئے سابقہ ​​حیثیت بحال کیا جائے: فاروق عبد اللہ

نئی دہلی، (یو این آئی)
جموں و کشمیر کے سابق وزیر اعلی اور نیشنل کانفرنس کے صدر فاروق عبد اللہ نے منگل کو لوک سبھا میں مطالبہ کیاکہ امن کے لئے 5 اگست 2019 سے قبل کی کشمیرکی حیثیت بحال کیا جائے۔

اسپیکر اوم برلا کانگریس ایک بار ملتوی ہونے کے بعد جب ایوان میں سکون قاِئم کرنے کے لئے زراعت سے متعلق بلوں پرکانگریس اور دیگر اپوزیشن جماعتوں کے رہنماؤں کو اختصار کے ساتھ اپنی بات کرنے کا موقع دے رہے تھے تو اسی دوران نیشنل کانفرنس کے رہنما نے بھی خطاب کے لئے ہاتھ اٹھایا۔ اسپیکر نے محسوس کیاکہ ایوان کے سینئر قائدین ہنگامہ بند کرنے کے بارے میں اپنی بات رکھیں گے، لہذا مسٹر عبد اللہ کو مائک پر بولنے کا موقع دیا گیا۔

مسٹر عبداللہ نے کہا، "جب تک 5 اگست سے پہلے کی صورتحال بحال نہیں ہوتی، تب تک وہاں امن بحال نہیں ہوسکتا ہے۔” مسٹر عبد اللہ کچھ اور بھی کہتے لیکن اس دوران ان کا مائک بند ہو گیا اور شور کے درمیان کچھ بھی نہیں سنا گیا۔ مسٹر عبداللہ کا مطلب جموں و کشمیر میں قیام امن کے لئے دفعہ 370 کی بحالی تھا۔

قابل ذکر ہے کہ گذشتہ سال 5 اگست کو جموں و کشمیر سے آرٹیکل 370 کو ختم کرکے ریاست کو دیئے گئے خصوصی حقوق واپس لے لیا گیا تھا۔ تب وزیر داخلہ امت شاہ نے کہا تھا کہ اب یہ ریاست بھی ملک کی دوسری ریاستوں کی طرح ایک ریاست بن چکی ہے اور اس کے پاس کوئی اضافی حقوق نہیں ہے۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close