اپنا دیشتازہ ترین خبریں

ریپبلک ٹی وی کی کھل گئی پول، پیسہ دے کر خریدی ’ٹی آر پی‘

ارنب گوسوامی سے بھی پوچھ گچھ ممکن، چار ملزمین سلاخوں کے پیچھے

ممبئی، (یو این آئی )
ممبئی کرائم برانچ نے ایک ایسے گروہ کو بے نقاب کرنے کا دعوی کیا ہے جو ٹیلیویژن چینلوں کی ٹی آر پی ریٹنگ بڑھانے کیلئے پیسے فراہم کیا کرتے تھے اس میں ریپبلک بھارت کی بھی شمولیت ہے اس معاملہ میں جلد ہی ممبئی پولیس ری پبلک بھارت کے ڈائریکٹرس، شعبہ اشہارات اور دیگر متعلقہ ملازمین سے باز پرس کریگی۔

ممبئی پولیس کمشنر پرم بیر سنگھ نے یہ اطلاع آج پرہجوم پریس کانفریس میں دی ہے، انہوں نے کہا کہ ٹی آر پی بڑھانے کیلئے پیسوں کا استعمال کیا گیا ہے یہ بات واضح ہونے کی وجہ سے کرائم برانچ ہنسا، پروڈ کاسٹنگ ریسرچ کاؤنسل بی اے آر سی کی شکایت پر تحقیقات شروع کی گئی تو معلوم ہوا کہ ٹی آر پی بڑھانے کیلئے گھروں میں ایسے چینلوں کو نشر کیا جاتا تھا، جہاں کوئی انگلش جانتا ہی نہیں تھا اس معاملہ میں پولیس نے چار ملزمین کو گرفتار کر لیا ہے۔

پرم بیر سنگھ نے بتایا کہ دو چھوٹے میڈیا چینل اور ایک انگلش چینل ری پبلک بھارت نے پیسہ دے کر ریٹنگ بڑھائی تھی ٹیلیویژن چینل میں 30 سے 40 ہزار کروڑ کا کاروبار ہوتا ہے اسی پر ہی ٹی آر پی کی پیمائش ہوتی ہے. ہنسا نے بتایا کہ چینل کی ٹی آر پی کچھ مشکوک ہے اس کے مطابق جب جانچ کی گئی تو اس میں ہنسا کا ایک سابق ملازم ملوث پایا اور اس کا ساتھی دار بھی اس کے ساتھ اس میں شریک جرم تھا ان دونوں کے قبضے سے پولیس نے 20 لاکھ اورساڑھے آٹھ لاکھ روپئے ضبط کئے ہیں اس کے ساتھ ہی ان کے بینک اکاؤنٹ کی بھی جانچ کی جا رہی ہے.

انہوں نے مزید بتایا کہ یہ اس ریکیٹ میں ملوث ملزمین گھروں میں چینل شروع رکھنے کا پیسہ ادا کرتے تھے اور چینلوں کی ٹی آر پی کے ساتھ چھیڑ خانی کی جاتی تھی اس دھوکہ دہی کے سبب مشتہرین اور دیگر کا کروڑوں روپئے کا نقصان ہوتا ہے کیونکہ ٹی آر پی پر ہی اشتہارات کا انحصار ہوتا ہے اور اسی سے اشتہارات کی قیمت طے ہوتا تھا تفتیش میں یہ بات سامنے آئی کہ فقط مراٹھی اور باکس سنیما نے ٹی آر پی بڑھانے کے لئے رقومات کی ادائیگی کی ہے اس کے فورا بعد پولیس نے پہلے کاندیولی پولیس اسٹیشن کی حدود سے ایک ملزم کو گرفتار کیا اس کے بعد تفتیش کے دوران مزید تین ملزمین کو گرفتار کیا گیا ہے۔

ارنب گوسوامی سے بھی پوچھ گچھ ممکن
ری پبلک بھارت کے سر براہ اور ڈائریکٹر و ایڈیٹر ارنب گوسوامی سے بھی پوچھ گچھ ممکن ہے کیونکہ اس کا اشارہ ممبئی کے پولیس کمشنر پرم بیر سنگھ نے دیا ہے انہوں نے کہا کہ چینل کے شعبہ اشتہارات سے لے کر دیگر متعلقین سے باز پرس ہوگی اور کسی کو بھی اس میں رعایت نہیں دی جائے گی. انہوں نے نام لئے بغیر ارنب گوسوامی کو سمن کر نے کا اشارہ دیا ہے ری پبلک بھارت کے ساتھ دیگر چینلوں اور اس ریکیٹ میں ملوث افراد سے باز پرس ہوگی۔ پرم بیرسنگھ نے بتایا کہ ٹی آر پی کے کھیل میں متاثرین اور مشتہرین سے بھی پوچھ گچھ ہوگی اور یہ معلوم کیا جائیگا کہ ان لوگوں نے ٹی وی چینلوں کو اشتہارات ٹی آر پی کے سبب دیا ہے یا پھر کس پیمانہ پر اشتہارات دئیے گئے ہیں۔

4 ملزمین سلاخوں کے پیچھے
ممبئی پولیس کمشنر نے یہ بھی واضح کیا ہے کہ اب تک اس معاملہ میں چار ملزمین کو گرفتار کیا گیا ہے ان کے اکاؤنٹ سے متعلق دیگر تفصیلات کی بھی جانچ کی جارہی ہے ان چار ملزمین کے علاوہ چینلوں کے اکاؤنٹ اور گوشواروں کی بھی جانچ کی جارہی ہے کہ آیا وہ کس اکاؤنٹ سے ان کو رقومات کی ادائیگی کرتے تھے اور کس کس کو یہ فرضی ٹی آر پی کا فائدہ پہنچا ہے اس پورے ریکیٹ میں کئی بڑے چینلوں کے بھی ملوث ہونے سے انکار نہیں کیا ہے جبکہ ری پبلک بھارت کے اس ریکیٹ میں شریک ہونے کا اعتراف ممبئی پولیس کمشنر نے کیا ہے۔

انپڑھ شخص انگلش چینل کا ناظر تھا
ممبئی پولیس کمشنر نے بتایا کہ تفتیش میں ایک ایسے شخص نے اعتراف کیا کہ وہ انپڑھ ہے اورانگریزی زبان سے نابلد ہے لیکن اسے چینل دن بھر گھر میں جاری رکھنے کیلئے عوض 5 سو سے 4 سو روپیہ ادا کیا جاتے تھے یہ پیسہ اسے نقد دئیے جاتے تھے ایسے کئی لوگ ہیں جنہیں صرف گھروں میں چینل شروع رکھنے کیلئے پیسہ دیا جاتا تھا کیبل آپریٹروں کے بھی اس میں ملوث ہونے کی پولیس تفتیش کر رہی ہے لیکن ابتدائی تفتیش میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ گھروں میں چینلوں کو جاری رکھ کر ٹی آر پی ریٹنگ کو بڑھایا جاتا تھا اور اس کے بعد ہی یہ گرفتاریاں عمل میں لائی ہے پولیس کمشنر نے اس میں مزید گرفتاریوں سے بھی انکار نہیں کیا ہے۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close