آئینۂ عالمتازہ ترین خبریں

اب کتے سونگھ کر کریں گے کورونا مریضوں کی شناخت!

ہیلسنکی، (یو این آئی)
فن لینڈ کے ہیلنسکی ایئرپورٹ پر کتوں کے ذریعہ کورونا وائرس کا سونگھ کر سراغ لگانے کے نئے نظم پر عمل شروع کر دیا گیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ کتے اپنی حساس ناک سے وائرس سے متاثر لوگوں کی شناخت کے عمل کو تیز کردیں گے۔ روایتی جانچ کا نظم بھی اپنی جگہ فعال رہے گا۔

ہیلنسکی پہلا ایئرپورٹ ہے جہاں اس رخ پر چند کتوں کو کووڈ 19 کو سونگھنے کی تربیت دی گئی ہے۔ یہ اطلاع ایئرپورٹ کے ڈائریکٹر یولا لیٹی جیف نے دی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اب تک کسی اور ایئرپورٹ پر کتوں کو اتنے بڑے پیمانے پر کووڈ 19 کے مریضوں کی شناخت کے لیے استعمال کرنے کی کوشش نہیں کی گئی۔ منصوبے پر اظمینان ظاہر کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ کووڈ 19 کو شکست دینے کے اقدامات میں ایک اضافی قدم ثابت ہوگا۔

زائد از ایک تحقیقی رپورٹوں میں کہا گیا ہے کہ کتے صد فیصد اس وائرس کو سونگھنے کی صلاحیت رکھتے ہیں اور یہ کسی علامت کے نمودار ہونے سے قبل ہی وائرس کو سونگھ لینے کے متحمل ہیں۔ جرمنی کی یونیورسٹی آف ویٹرنری میڈیسین ہانوور، ہانوور میڈیکل اسکول اور جرمن آرمڈ فورسز کی ایک تحقیق کے مطابق اگر کتوں کو مناسب تربیت فراہم کی جائے تو وہ انسانی تھوک کے نمونوں سے کورونا وائرس کی شناخت 94 فیصد حد تک درست طریقے سے کرسکتے ہیں۔ کورونا وائرس کی ٹیسٹنگ کے لیے کتوں کا استعمال اس لئے بھی آسان ہے کہ ایک منٹ میں نتیجہ سامنے آجاتا ہے۔

آن لائن اطلاعات کے مطابق اس مقصد کے لیے مشتبہ یا کسی بھی شخص کی جلد پر ایک وائپ پھیر کر اسے ایک کپ میں کتوں کے حوالے کردیا جاتا ہے۔ ایسا اس لئی کیا جاتا ہے تاکہ کتوں کو سنبھالنے والوں کو بیماری نہ لگے۔ اس ٹیسٹ میں اگر کوئی متاثر پایا گیا تو اس کا معمول کے مطابق کورونا ٹیسٹ ہوتا ہے تاکہ نتیجے کی توثیق ہو سکے۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close