تازہ ترین خبریںدلی این سی آر

طنز ومزاح کے مشہور شاعر نشتر امروہوی کا انتقال، ادبی حلقوں میں غم کی لہر

نئی دہلی (امیر امروہوی)
طنز و مزاح کے مشہور شاعر سید عین شجاع عرف نشتر امروہوی کا اچانک حرکتِ قلب بند ہو جانے سے 63 سال کی عمر میں انتقال ہو گیا۔ نشتر امروہوی مستقل طور پر دہلی کے دلشاد گارڈن میں مقیم تھے اور وہ جی ٹی بی اسپتال کے سی پی ڈبلو ڈی محکمہ میں ملازم تھے۔

نشتر امروہوی ایک اچھے شاعر کے ساتھ ساتھ ایک اچھے انسان بھی تھے دہلی کا ادبی حلقہ انہیں تا دیر یاد رکھے گا۔دہلی میں انتقال کے بعد اُن کے جسدِ خاکی کو اُن کے آبائی وطن امروہہ لے جایا گیا۔ جہاں آج صبح 11 بجے اُن کی نمازِ جنازہ مولانا وفادار حسین نے ادا کرائی، تدفین اُن کے آبائی قبرستان محلہ لکڑہ میں ہوئی۔ پسماندگان میں اہلیہ اور ایک بیٹا ہے۔

واضح ہوکہ نشتر امروہوی طنز و مزاح کی شاعری عرصہ دراز سے کر رہے تھے اور پوری دنیا میں اپنی شناخت بنانے میں کامیاب ہوئے تھے۔ اُن کے انتقال سے ادبی حلقوں میں غم کا ماحول ہے اور انہیں خراجِ تحسین پیش کیا جا رہا ہے۔ جن میں اسلم دہلوی، آفتاب آذر، قاسم شمسی، سیف سحری، قاصر سہسوانی، ماسٹر نثار احمد،شاہد گڑ بڑ، دانش ایوبی، ایاز احمد ایاز، فرحت اللہ خان فرحت، شکیل ابن نظر، جگر نوگانوی کے نام قابل ذکر ہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close