اپنا دیشتازہ ترین خبریں

نوبنو گھیراؤ مہم: پولیس کا لاٹھی چارج، آتشی اسلحہ کے ساتھ بی جے پی ورکر گرفتار

کلکتہ، (یواین آئی)
بی جے پی کی ریاستی سیکریٹریٹ نوبنو گھیراؤ مہم کے دوران بی جے پی ورکروں اورپولس کے درمیان جھڑپ ہوئی۔ بی جے پی ورکروں کو منتشر کرنے کیلئے پولس نے آنسو گیس چھوڑے۔ ہوڑہ میدان میں بی جے پی ورکروں اورپولس کے درمیان جھڑپ میں اس وقت شدت اختیار کرگئی جب پولس نے بی جے پی ورکروں کو آگے بڑھنے سے روک دیا تو بی جے پی کارکنوں نے پولیس پر اینٹیں اور بم پھینکنا شروع کردیا ہے۔ اس کے بعد پولس نے مجمع کو منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس چھوڑے ہیں۔

اس کے باوجود صورتحال جب قابو میں نہیں آئی تو پولس نے آنسو گیس کے شیل فائر کرنا شروع کردیئے۔ نتیجہ کے طور پر، بی جے پی کارکن منتشر ہوگئے۔ پولیس نے دعوی کیا ہے کہ اس وقت ملیک پھاٹک کے قریب بی جے پی کارکن سے آتشیں اسلحہ برآمد ہوا اور اس شخص کو گرفتار کرلیا گیا ہے۔ بی جے پی کی نوبنومہم کو لے کر صبح سے ہی بی جے پی ورکروں اور پولس کے درمیان تناؤ کا ماحول بناہوا تھا۔ جلوس دوپہر 12 بجے شروع ہونا تھا، لیکن مبینہ طور پر بی جے پی قائدین کی گاڑیاں کئی جگہوں پر روک دی گئیں تھیں۔ بی جے پی لیڈران بہر صورت ریاستی سیکریٹریٹ نوبنو جانے کیلئے بضد تھے۔نو بنو کے آس پاس تین زون بنائے گئے تھے اور ہرجگہ بڑی تعداد میں پولس اہلکار کو تعینات کردیا گیا تھا۔

ادھر ہوڑہ میدان میں جلوس شروع ہونے سے پہلے بی جے پی کارکنوں نے پولیس کی رکاوٹیں ہٹا دیں۔ وہیں کلکتہ شہر ہسٹنگ میں بی جے پی کارکنان بڑی تعداد میں جمع تھے۔یہاں بھی پولس کی روکاوٹ کو ہٹا کر آگے بڑھنے کی کوشش کرنے لگے۔پولس نے بی جے پی کے جلوس کو منتشر کرنے کے لئے لاٹھیوں کا استعمال کیا۔ مظاہرین نے اینٹوں کی بارش شروع کردی۔ ہیسٹنگ میں بی جے پی کے متعدد کارکن زخمی ہوئے۔ کیلاش وجے ورگی اور لاکٹ چٹرجی سمیت بی جے پی قائدین پولس کی راہ میں رکاوٹ بننے کے بعد ہسٹنگ چوراہے پر بیٹھ گئے۔ہسٹنگ، ہوڑہ میدان کے علاوہ سانتراگاچھی، سنٹرل ایونیو میں تناؤ کا ماحول تھا۔

خیال رہے کہ بی جے پی لیڈر منیش شکلا کی موت کے خلاف بی جے پی نے آج نوبنو گھیراؤ مہم کا اعلان کیا تھا۔ جنوبی 24 پرگنہ کے سونا پور ریلوے اسٹیشن پر بھی بی جے پی کارکنان اور پولس کے درمیان بڑے پیمانے پر جھڑپ کے واقعات رونما ہوئے ہیں۔ بی جے پی ورکر سونا پور ریلوے اسٹیشن پر داخل ہوکر کلکتہ جا رہی اسپیشل ٹرین میں داخل ہونے کی کوشش کررہے تھے۔ ریلوے پولس نے جب بی جے پی ورکروں کو روکنے کی کوشش کی تو جلوس میں شامل بی جے پی ورکروں نے اینٹوں سے حملہ کردیا۔ پولس نے الزام عاید کیا ہے کہ بی جے پی ورکروں نے بم سے بھی حملہ کیا ہے۔ کلکتہ اور ہوڑہ میں 4ہزار سے پولس اہلکار افراد کو تعینات کیا گیا تھا۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close