دلی این سی آر

عمران حسین نے لیا ضروری اشیاء کی خوردہ قیمتوں کا جائزہ

وزیر خوراک نے دی ذخیرہ اندوزی اور بلیک مارکیٹنگ کے خلاف موثر کارروائی کرنے کی ہدایت

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دہلی کے وزیر خوراک و رسد عمران حسین نے آج پیاز، ٹماٹر، آلو اور دیگر ضروری اشیاء کی خوردہ قیمتوں سے متعلق امور کا جائزہ لیا۔ اس سلسلے میں منعقدہ جائزہ میٹنگ میں فوڈ اینڈ سول سپلائی ڈیپارٹمنٹ، ایگریکلچرل پروڈکٹ مارکیٹنگ کمیٹی (اے پی ایم سی) اور دہلی ایگریکلچرل مارکیٹنگ بورڈ (ڈی اے ایم بی) کے سینئر افسران شریک تھے۔

میٹنگ میں عمران حسین ضروری اشیائے کی قیمتوں کے رجحانات کا جائزہ لیا۔ یہاں افسران نے بتایا کہ دہلی میں پیاز کی خوردہ قیمتیں پچھلے سال کے مقابلے میں کم ہیں۔ انہوں نے یہ بھی بتایا کہ پچھلے سال کے مقابلہ میں اس سال پیاز کے مطالبے میں کمی واقع ہوئی ہے اور پیاز کی ایکس پورٹ پر پابندی کی وجہ سے مستقبل قریب میں پیاز کی قیمتیں مزید مستحکم ہوں گی، اسی طرح دہلی میں اکتوبر کے آخر تک پیاز کی مناسب مقدار بھی دستیاب ہوگی۔

افسران نے بتایا کہ جہاں تک ٹماٹر کا تعلق ہے وہ جلدی خراب ہونے والی چیز ہے اور ان کی قیمتیں موسم کے مطابق منحصر ہیں کیونکہ پیداواری کے علاوہ ریاستوں میں غیر موسمی اور موسلا دھار بارش بھی رسد کی قیمتوں کے نتیجے میں طلب و رسد کی صورتحال کو بری طرح متاثر کرتی ہیں۔ میٹنگ میں متعلقہ محکمہ کے افسران نے خیال جتایا کہ جلد ہی دہلی میں ٹماٹر کی خوردہ قیمتیں بھی مستحکم ہوجائیں گی۔ افسران نے آلو کے بارے میں وزیر موصوف کو بتایا کہ پچھلے سال کے مقابلہ میں رواں سال آلو کی کم پیداوار کی وجہ سے ان کی خوردہ قیمت میں اضافہ ہوا ہے۔

وزیر خوراک و رسد عمران حسین نے متعلقہ اداروں کو ہدایت دی کہ وہ کسی بھی ذخیرہ اندوزی اور بلیک مارکیٹنگ کے خلاف سخت کارروائی کریں۔ وزیر عمران حسین نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ مستقبل قریب میں ان اشیاء کی خوردہ قیمتوں میں استحکام متوقع ہے۔ انہوں نے کہا کہ عوام کو اس سے گھبرانے کی ضرورت نہیں ہے۔ وزیر موصوف نے کہا کہ دہلی حکومت ضروری سامان کی قیمتوں پر گہری نگاہ رکھے ہوئے ہے، انہوں نے یقین دہانی کرائی ہے کہ جب بھی ضرورت ہوگی دہلی حکومت ضروری خورد اشیاء کی قیمتوں میں استحکام کیلئے مارکیٹ میں مناسب مداخلت کرے گی۔

انہوں نے فوڈ اینڈ سول سپلائی کمشنر کو بھی ہدایت دی کہ وہ متعلقہ محکموں، ایجنسیوں کے ساتھ ہفتہ وار میٹنگیں کریں اور اس بات کو یقینی بنائیں کہ ضروری خورد اشیاء کی قیمتیں مستحکم اور کنٹرول میں رہیں، عوام کو یہ مہنگی نہ ملیں اور کوئی ان کی زخیرہ اندوزی نہ کر سکے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close