تازہ ترین خبریںدلی نامہ

’ایم سی ڈی اگر اسپتالوں کو نہیں چلا سکتی تو انہیں دہلی حکومت کو سونپے‘

ہندو راؤ اور کستوربا گاندھی اسپتال کے ڈاکٹروں اور اسٹاف کی تنخواہیں فوراً جاری کرے ایم سی ڈی: ستیندر جین

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دہلی کے وزیر صحت ستیندر جین نے آج کہاکہ ایم سی ڈی میں بر سراقتدار بی جے پی، ایم سی ڈی اور ان کے اسپتالوں کو چلا نہیں پا رہی ہے۔ نارتھ ایم سی ڈی کے تحت چلنے والے ہندو رواؤ اسپتال اور کستوربا گاندھی اسپتال کے ڈاکٹروں اور میڈیکل اسٹاف کو کئی ماہ سے تنخواہیں نہیں دیئے جانے پر دونوں اسپتال کے ڈاکٹروں اور میڈیکل اسٹاف نے ہڑتال پر جانے کا انتباء دیا ہے۔ جس کو دیکھتے ہوئے دہلی حکومت نے ان اسپتالوں میں کورونا کا علاج کرا رہے مریضوں کو اتوار تک دہلی حکومت کے اسپتالوں میں شفٹ کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں۔

پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر صحت ستیندر نے کہاکہ ہم نے میڈیا میں ان دونوں اسپتالوں میں تنخواہیں نہ دیئے جانے کے تعلق سے پڑھا اگر نارتھ ایم سی ڈی سے کستوربا گاندھی اسپتال اور ہندو راؤ اسپتال کے ڈاکٹروں اور اسٹاف کو تنخواہیں نہیں دی جا رہی اور وہ اسپتال چلا نہیں پا رہے پیں تو یہ اسپتال دہلی حکومت کو سونپ دیں، دہلی حکومت ان اسپتالوں کوبھی بہتر طریقے سے چلا لے گی اور سبھی ملازمین کو بھی تنخواہیں دے دیں گے۔ انہوں نے کہاکہ موجودہ وقت میں ہندو راؤ اسپتال میں 20 کوویڈ مریض بھرتی ہیں، انہیں دہلی حکومت کے اسپتال میں شفٹ کر دیا جائے گا۔ یہ مریض اپنی مرضی سے دہلی حکومت کے اسپتالوں میں داخل ہو سکتے ہیں۔

وزیر صحت نے کہاکہ دہلی میں کل 2807 کورونا کے کیس پازیٹیو تھے اور کل ہی 50 ہزار سیمپلوں کی جانچ دہلی میں فی الحال پازیٹیو کیس کا ریوشیو 5.82 فیصد ہے۔ دہلی میں گزشتہ روز کوویڈ سے 39 اموات تھیں جبکہ 3098 مریضوں کو اسپتال سے چھٹی دی گئی ہے۔ اب دہلی میں کل پازیٹیو کیس 22 ہزار سے بھی کم ہیں۔ جبکہ کچھ دن پہلے یہ 32000 قریب پہنچ گئے تھے۔

ستیندر جین نے کہا کہ دہلی کا ہندو راؤ اسپتال ایم سی ڈی چلاتی ہے اور تنخواہیں نہ ملنے پر وہاں کے ڈاکٹروں اور میڈیکل اسٹاف نے ہڑتال پر جانے کی دھمکی دی ہے۔ ان کے اتوار کو ہڑتال پر جانے کے امکانات ہیں۔ وہاں پر کوویڈ کے مریض بھی بھرتی ہیں اس لئے دہلی حکومت نے مریضوں کو دہلی حکومت کے اسپتالوں میں ریفر کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں۔

وزیر صحت ستیندر جین نے کہاکہ ہماری ایم سی ڈی سے اپیل ہے کہ وہاں کے ڈاکٹروں اور میڈیکل اسٹاف کو جلد سے جلد ان کی تنخواہیں دی جائیں۔ ستیندر جین نے کہاکہ مجھے نہیں لگتا ہے کہ ایم سی ڈی کے پاس فنڈ کی کمی ہے کیوںکہ ایم سی ڈی لوگوں پر بھاری ٹیکس لگاتی ہے جس سے کافی ریونیو جمع ہوتا ہے لیکن کوئی نہیں جانتا کہ یہ پیسہ کہاں جاتا ہے؟ مرکزی حکومت نے ایم سی ڈی کو حکم دیا تھا کہ ہیلتھ ٹریڈ لائسنس دینے کا عمل ختم کریں لیکن وہ لوگ اسے بھی ہٹانے کو تیار نہیں ہیں۔

وزیرصحت ستیندر جین نے لوگوں سے اپیل کی کہ کوویڈ سے بچنے کیلئے احتیاط برتیں، سبی لوگ ماسک ضرور لگائیں، کیونکہ ماسک لگانے سے کافی حد تک کوویڈ سے بچاؤ ہو سکتا ہے۔ سوشل ڈستینسنگ پر عمل کرتے ہوئے اپنے ہاتھوں کو بار بار دھوتے رہیں۔ انہوں نے کہا کہ ماسک لگانے سے آلودگی اور کورونا دونوں سے بچا جا سکتا ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close