اپنا دیشتازہ ترین خبریں

ہاتھرس اجتماعی عصمت دری: متاثرہ کی موت، مجرمین کو جلد از جلد سزا دینے کا مطالبہ

ہاتھرس: (یواین آئی)
صفدر گنج اسپتال میں آج ہاتھرس میں درندگی کی شکار ہوئی دلت متاثرہ بالآخر زندگی کی جنگ ہار گئی۔ جسے چار حیوانوں نے 14 ستمبر کو ہوس کا شکار کرنے کے بعد اس کی ریڑھ کی ہڈی توڑ دی تھی اور زبان کاٹ دیا تھا۔ اس کے بعد سنگین طور پر زخمی متاثرہ کو پہلے علی گڑھ مسلم یونیورسیٹی کے جواہر لال نہرو میڈیکل کالج میں بھرتی کروایا گیا تھا۔ بعد میں ان کی سنگین حالت کے پیش نظر دہلی کے ایمس میں ریفر کر دیا گیا تھا۔ بالآخر آج وہ زندگی کی جنگ ہار گئی۔

مغربی اترپردیش کے ہاتھرس میں درندگی کی شکار دلت متاثرہ کی موت کے بعد اپوزیشن نے انسانیت کو شرمسا کرنے والے اس واقعہ پر یوگی حکومت کی سخت تنقید کرتے ہوئے ملزمین کو جلد سخت سے سخت سزا دلانے کا مطالبہ کیا ہے۔ بہوجن سماج پارٹی (بی ایس پی) کانگریس، سماج وادی پارٹی (ایس پی) اور سہیل دیو بھارتیہ سماج پارٹی نے اس واقعہ کے سلسلے میں یوگی حکومت کو نشانے پر لیا ہے اور نظم ونسق و خواتین کی سیکورٹی کے بدحال ہونے کا الزام لگایا ہے۔

بی ایس پی سپریمو مایاوتی نے اپنے ٹوئٹ میں لکھا’یو پی کے ہاتھرس میں گینگ ریپ کے بعد دلت متاثرہ کی آج ہوئی موت کی خبر کافی تکلیف دہ ہے۔ بی ایس پی کا مطالبہ ہے کہ حکومت متاثرہ کنبے کی ہر ممکن تعاون کرے و فاسٹ ٹریک کورٹ میں مقدمہ چلا کر مجرمین کی سزا جلد از جلد یقینی بنائے۔ محترمہ واڈرا نے منگل کو اپنے ٹوئٹ میں یہاں بتایا کہ ‘ہاتھرس میں حیوانیت کی شکار ہونے والی دلت متاثرہ لڑکی نے صفدر گنج اسپتال میں دم توڑ دیا۔ دو ہفتے تک وہ اسپتالوں میں زندگی اور موت سے لڑتی رہی۔ ہاتھرس، شاہجہاں پور اور گورکھپور میں ایک کے بعد ایک ریپ کے واقعات نے ریاست کو دہلا کر رکھ دیا ہے۔ انہوں نے لکھا ‘یو پی میں نظم ونسق حد سے زیادہ بگڑ چکا ہے۔ خواین کی سیکورٹی کا نام و نشان نہیں ہے۔ مجرمین کھلے عام جرائم کر رہے ہیں۔ اس بچی کے قاتلوں کو کڑی سے کڑی سزا ملنی چاہئے۔ وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ کو مخاطب کرتے ہوئے انہوں نے کہا ‘اترپردیش کی خواتین کی سیکورٹی کے تئیں آپ جوابدہ ہیں’۔

سماج وادی پارٹی سربراہ اکھلیش یادو نے کہا ‘ہاتھرس کی گینگ ریپ اور درندگی کی شکار ایک بے بس بیٹی نے آخر کار دم توڑ دیا۔ نم آنکھوں سے خراج عقیدت، آج کی بے حسی حکومت سے اب کوئی توقع نہیں بچی ہے۔ سہیل دیو پارٹی کے سربراہ اوم پرکاش راج بھر نے اپنے ٹوئٹ میں لکھا’ہاتھرس اجتماعی عصمت دری متاہرہ دلت لڑکی کی صفدر جنگ اسپتال میں علاج کے دوران انتقال کی خبر کافی تکلیف دہ ہے۔ میری پوری ہمدردی اہل خانہ کے ساتھ ہے۔ اترپردیش میں نظم ونسق پوری طرح سے ختم ہوچکا ہے۔ پسماندہ طبقات، دلت محروم طبقات کے ساتھ ظلم و ناانصافی بڑھتی جارہی ہے۔ انہوں نے لکھا’اب ہندوؤں کے ٹھیکیداروں کی آواز منھ سے نہیں نکلے گی کیونکہ یہ دلت ہندو تھی۔ اس لئے سبھی ہندو کے ٹھیکیدار خاموشی اختیار کئے ہوئے ہیں۔ یوپی حکومت ایک مخصوص طبقے کے مفاد میں کام کر رہی ہے۔ اس کو عام عوام کے مفاد سے کوئی سروکار نہیں ہے۔ یوگی جی خاطیوں کے خلاف جلد سے جلد سزا کو یقینی بنائیں۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close