اپنا دیشتازہ ترین خبریں

’ایسٹ انڈیا کمپنی جیسا سلوک کر رہی ہے حکومت‘

ممبئی: (یو این آئی )
این سی پی کے ریاستی ترجمان مہیش تاپسے نے کہا ہے کہ مودی سرکار لیبر ایکٹ اور کسان ایکٹ کو ختم کرکے ایسٹ انڈیا کمپنی کی طرح برتاؤ کر رہی ہے۔ زوم کے ذریعے منعقد پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے مہیش تاپسے نے کسان و مزدور مخالف پالیسی، جی ایس ٹی اور بہار انتخابات پر تبصرہ کرتے ہوئے مودی سرکار پر سخت تنقید کی۔ انہوں نے کہا کہ پارلیمنٹ کا مانسون اجلاس عام آدمی کے حقوق کی تحفظ کے لئے نہیں بلکہ سرمایہ داروں کے مفاد کے لئے ہے۔

انہوں نے کہا کہ زرعی بل میں بڑے بڑے اعلانات کیے گئے ہیں جنہیں پڑھ کر اچھا لگتا ہے مگر ان کا باریک بینی سے مطالعہ کرنے پر معلوم ہوتا ہے کہ کاشتکاروں کے مفاد کا کسی بھی لحاظ سے تحفظ نہیں کیا گیا ہے۔ فرض کیجئے کل بازار گرگیا یا چڑھ گیا تو کاشتکاروں کو اس کا کوئی فائدہ نہیں ہوگا۔ پیداوار کے تعلق سے پالیسی بنائی گئی ہے لیکن اگر کسی نے اس سال معاہدہ کیا ہوگا اور آئندہ سال بازار کی قیمت معاہدے سے زائد ہوا تو سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ اس کا فائدہ کیا اس کسان کو ملے گا؟ اس تعلق سے کوئی وضاحت نہیں کی گئی ہے۔

مہیش تاپسے نے کہا کہ دوسرا قانون مزدوروں کے بارے میں بنایا گیا ہے۔ مزدورو ں کے تعلق سے تین بل میں تبدیلی کئی گئی اوردوسرے جانب ملک کے وزیرمحنت نے مزدوروں کے مفاد کا تحفظ کرنے کے بجائے ملک کے سرمایہ داروں کے مفاد کا تحفظ کیا ہے۔ اب اگر کسی کارخانے یا کمپنی میں تین سو ملازمین ہوئے تو ایسے تین سو ملازمین کی حامل کو کمپنی کو بغیر کسی حکومتی اجازت نامے کے بند کرنے کی آزادی دی گئی ہے۔ اس کے علاوہ اس بل میں اس بات کا بھی خاص طور سے لحاظ کیا گیا ہے کہ کوئی بھی مزدور کسی مزدور تحریک سے وابستہ نہیں ہوسکتا ہے وگر نہ سرمایہ دار اسے ملازمت سے برخاست کرسکتا ہے۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close