تازہ ترین خبریںدلی نامہ

اب دلی کو بھی ملے گا ٹونٹی سے 24 گھنٹے پینے کا صاف پانی

دہلی میں 24 گھنٹے بجلی کی فراہمی کی طرح 24 گھنٹے صاف پانی کی فراہمی کو بھی بنائیں گے یقینی: کجریوال

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دہلی میں بجلی ہاف اور پانی معاف کے وعدے پر عمل کرتے ہوئے دہلی کو صاف شفاف ٹونٹی کا پانی فراہم کرنے پر کام کر رہی دہلی حکومت کے وزیر اعلی اروند کجریوال نے آج کہاکہ دنیا کے مختلف ترقی یافتہ ممالک کے دارالحکومتوں کی طرح دارالحکومت دہلی کو بھی اب 24 گھنٹے ٹونٹی سے صاف شفاف پینے پانی ملے گا۔

وزیر اعلی نے کہاکہ اب دہلی کے رہائشیوں کو ٹینک ڈلوا کر پانی ذخیرہ کرنے کے کی کوئی ضرورت نہیں اور نہ ہی پمپ لگانے کی ضرورت ہے۔ 24گھنٹے صاف پینے کا پانی اوپری منزل تک پریشر سے پہنچے گا۔ انہوں نے کہاکہ جس طرح عام آدمی پارٹی کی دہلی حکومت نے پچھلے پانچ سالوں میں دہلی میں 24 گھنٹے بجلی کی فراہمی کو یقینی بنایا ہے، اسی طرح اب 24 گھنٹے صاف پانی کی فراہمی کو بھی دہلی حکومت یقینی بنائے گی۔ انہوں نے کہا کہ دہلی حکومت نے اس کیلئے ایک مشیر کی تقرری کا عمل شروع کیا ہے، جو پانی کے ہر قطرہ کو برباد ہونے سے بچانے کیلئے ہمیں انتظام اور جدید ٹکنالوجی کے بارے میں بتائے گا۔

وزیر اعلی نے کہاکہ دہلی میں فی یوم 176 لیٹر پانی ایک فرد پر خرچ ہوتا ہے، لیکن اس سے بہت زیادہ پانی ضائع ہوتا ہے۔ اب ہمیں پانی کے انتظام اور نظام کی احتساب کا فیصلہ کرنے کی ضرورت ہے، تاکہ پانی کا ایک قطرہ بھی ضائع نہ ہو۔ ہم دہلی میں پانی کی دستیابی کو مزید بڑھانے کیلئے یوپی، ہماچل پردیش، اتراکھنڈ سمیت دیگر ریاستی حکومتوں سے بات کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ حزب اختلاف کے کچھ ساتھیوں کو غلط فہمی ہے کہ ہم پانی کی نجی کاری کر رہے ہیں۔ لیکن میں یہ واضح کردوں کہ پانی کی نجی کاری نہیں کی جانی چاہئے اور ایسا نہیں ہوسکتا، ہر ایک کو اس کے بارے میں یقین دلایا جانا چاہئے۔

وزیر اعلی اروند کجریوال نے کہا کہ دہلی اسمبلی انتخابات سے قبل ہم نے وعدہ کیا تھا کہ جس طرح عام آدمی پارٹی کی حکومت نے پچھلے 5 سالوں میں دہلی میں 24 گھنٹے بجلی کی فراہمی کو یقینی بنایا ہے، اگلے 5 سالوں میں اب دہلی میں آپ کے گھر میں 24 گھنٹے ٹونٹی سے پینے کے صاف پانی کی فراہمی کو یقینی بنائیں گے۔ آج مجھے یہ کہتے ہوئے خوشی ہے کہ ہم نے یہ عمل شروع کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایک روز قبل دہلی جل بورڈ کی میٹنگ منعقد ہوئی تھی،جس میں ہم نے دہلی جل بورڈ میں ایک مشیر کی تقرری کا فیصلہ کیا ہے، انہوں نے کہا کہ کورونا کی وجہ سے اس میں تاخیر ہوئی، بصورت دیگر ہم مارچ اپریل میں ہی مشیر مقرر کرنے کیلئے کارروائی کر رہے تھے۔

وزیر اعلی نے کہا کہ ہمیں سمجھنا ہوگا کہ آج دہلی میں پانی کی قلت کیوں ہے؟ آپ کے گھر کو دہلی میں 24 گھنٹوں تک پانی کیوں نہیں ملتا؟ دنیا کے کسی بھی دارالحکومت میں جائیں، وہاں 24 گھنٹے پانی ملتا ہے۔ لیکن دہلی میں کیوں نہیں ملتا؟ ہماری دہلی میں پانی کا دباؤ اتنا کم ہے کہ لوگوں کو پمپ لگانے پڑتے ہیں۔ لوگوں کو اوپر کی منزل تک پانی پمپ کا استعمال کرنا پڑتا ہے۔ جس طرح دوسرے ممالک کے دارالحکومتوں کو 24 گھنٹے پانی ملتا ہے، اسی طرح اب یہاں بھی ملے گا۔ کسی ٹینک یا پمپ کی ضرورت نہیں ہو گی۔

وزیر اعلی نے کہا کہ دہلی میں روزانہ 930 ملین گیلن پانی پیداوار ہوتی ہے۔ جبکہ دہلی کی آبادی دو کروڑ ہے۔ اس کا مطلب یہ ہے کہ دہلی کے ہر فرد کیلئے روزانہ 176 لیٹر پانی کی پیداوار ہوتی ہے۔ دہلی میں زیادہ پانی ہو اس کیلئے ہم یوپی، ہماچل، اتراکھنڈ اور دیگر حکومتوں سے بات کر رہے ہیں۔ اسی وقت دہلی میں پانی کی مقدار جو 930 ایم جی ڈی پانی ہے، یہ 176 لیٹر پانی ہر شخص کیلئے ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close