تازہ ترین خبریںدلی نامہ

دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین کا فیصلہ 19 اکتوبر کو

محکمہ نے انتخاب کا کیا اعلان، امانت اللہ خان کا چیئرمین بننا تقریباً طے

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دہلی وقف بورڈ میں تقریباً 9 ماہ سے خالی چیئرمین کی سیٹ کو اپنا عہدیدار اب ملنے والا ہے۔ بورڈ میں ممبر اسمبلی زمرے کا انتخاب اور نوٹیفکیشن ہونے کے بعد اب چیئر مین کے انتخاب کا اعلان بھی جاری ہوگیا ہے۔ 19 اکتوبر کو دہلی وقف بورڈ کے نئے چیئرمین کا انتخاب عمل میں آئے گا۔ اطلاع کے مطابق دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین کے انتخاب کیلئے نوٹیفکیشن جاری کیا جا چکا ہے اور چیئر مین کے انتخاب کی تیاریاں جاری ہیں۔

قابل ذکر ہے کہ دہلی میں اسمبلی انتخاب کے اعلان کے ساتھ ہی دہلی وقف بورڈ میں رکن اسمبلی زمرے سے ممبر اور چیئرمین امانت اللہ کی بورڈ سے رکنیت ختم ہو گئی تھی۔ جس کے بعد رکن اسمبلی زمرے کے بورڈ کے ممبر کیلئے دوبارہ الیکشن کرایا گیا، جس میں امانت اللہ خان بلا مقابلہ ممبر منتخب ہو گئے تھے، اسی کے ساتھ دہلی وقف بورڈ میں تمام ممبر مکمل ہوگئے تھے۔

بتا دیں کہ امانت اللہ خان دہلی وقف بورڈ کا انتخاب جیت چکے تھے، لیکن حکومت کی جانب سے آڈٹ کے عمل میں تاخیر کی وجہ سے، ان کے ممبر بننے کا نوٹیفکیشن جاری نہیں کیا گیا تھا۔ اب 19 اکتوبر کو، دہلی وقف بورڈ کے سات ممبران ڈویژنل کمشنر آفس میں ایک نئے چیئرمین کا انتخاب کریں گے۔ جس میں امانت اللہ خان کی تیسری بار چیئرمین بننے کے قوی امکان ہیں۔ امانت اللہ خان پہلی مرتبہ 2016 میں دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین بنے تھے۔ اس وقت ان کا دورانیہ صرف 6 ماہ تھا۔ وہ دوسری مرتبہ 2018 میں وقف بورڈ کے چیئرمین بنے اور ان کی میعاد فروری 2020 تک رہی۔ اب ایک بار پھر وہ دہلی وقف بورڈ کے چیئرمین بننے کیلئے ایک مضبوط دعویدار ہیں۔

امانت خان کے ساتھ دہلی وقف بورڈ میں رکن پارلیمنٹ زمرے میں راجیہ سبھا کے سابق رکن پرویز ہاشمی، ایڈوکیٹ حمال اختر، چو دھری شریف احمد، نعیم فاطمہ کاظمی، رضیہ سلطانہ اور آئی اے ایس افسر عظیم الحق ممبر ہیں۔ یہاں بتاتے چلیں کہ دہلی وقف بورڈ کے چیئر مین رہتے ہوئے امانت اللہ خان کی مسلم معاشرے کی فلا ح و بہبود کیلئے جو سرگرمیاں رہیں، اماموں اور مؤذنوں کی تنخواہیں بڑھائیں اور غیر وقف مساجد کے اماموں اور موذنوں کو بھی اس میں شامل کیا، علاوہ ازیں دہلی فسادات میں متاثرین کو جس طرح امداد فراہم کی، ان تمام مثبت سرگرمیوں میں امانت اللہ خان کا نمایاں کردار رہا، جس سے وہ دہلی وقف بورڈ کے مقبول ترین چیئر مین مانے جاتے ہیں۔ اس لحاظ سے یہ یقینی طور پر مانا جا رہا ہے اور امید کی جا رہی ہے کہ 19 اکتوبر کو ہونے والے بورڈ کے چیئر مین کے انتخاب میں امانت اللہ خان ایک مرتبہ پھر منتخب ہو کربورڈ کے چیئر مین کے عہدے پر فائز ہوں گے اور قوم کے فلاحی کاموں کو انجام دیں گے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close