تازہ ترین خبریںدلی نامہ

کسانوں کی کاشتکاری چھین کر کمپنیوں کو دینا چاہتی ہے بی جے پی: اروند کجریوال

زرعی قانون کے خلاف ’آپ‘ کی پنجاب یونٹ کے لیڈران اور کسانوں کا دہلی کے جنتر منتر پر احتجاجی مظاہرہ

نئی دہلی (امیر امروہوی)
زرعی قانون کے خلاف ملک بھر میں کسانوں کا احتجاج کم ہونے کا نام نہیں لے رہا ہے۔ مرکزی حکومت اس کو جتنا دبانے کی کوشش کر رہی ہے یہ احتجاج اتنا ہی وسیع ہوتا جا رہا ہے۔ اسی کڑی میں عام آدمی پارٹی کے پنجاب یونٹ کے لیڈران اور ہزاروں کسانوں نے دہلی کے جنتر منتر پر زرعی قانون کے خلاف زبردست احتجاجی مظاہرہ کیا۔

جنتر منتر پر احتجاج کرنے آئے پنجاب کے کسانوں کی حمایت کرتے ہوئے دہلی کے وزیر اعلی اروند کجریوال نے مرکزی حکومت کے منظور کردہ زرعی قوانین کو کسان مخالف بتایا۔ وزیر اعلی نے کہاکہ بی جے پی حکومت زرعی قوانین منظور کرکے کسانوں سے ان کی کاشتکاری چھین کر کمپنیوں کو دینا چاہتی ہے۔ کجریوال نے ’جے جوان، جے کسان‘ کا نعرہ لگاتے ہوئے کہا کہ پنجاب کے کسانوں نے چوبیس گھنٹوں کی سورج کی روشنی میں سخت محنت کی اور ہرے انقلاب کو جنم دیا اور اناج کے معاملے میں ملک کو خود کفیل بنا دیا۔

انہوں نے کہا کہ پورے ملک میں فصل کا صرف 6 فیصد ہی ایم ایس پی پر خریدا جاتا ہے، جبکہ 100 فیصد فصل ایم ایس پی پر خریدی جانی چاہئے۔ بی جے پی نے 2014 کے لوک سبھا انتخابات میں سوامی ناتھن رپورٹ کو نافذ کرنے کا وعدہ کیا تھا، جس میں کہا گیا تھا کہ ایم ایس پی فصل کی لاگت سے ڈیڑھ گنا ہوگی، لیکن افسوس انتخابات میں کامیابی کے بعد بی جے پی نے ایم ایس پی کو ختم کردیا۔ انہوں نے زرعی قانون پاس کرنے سے پہلے کسانوں سے نہیں پوچھا، کسانوں کو مرنے کیلئے چھوڑ دیا، ان کی پیٹھ میں چھرا گھونپ دیا۔ مرکز میں بی جے پی حکومت کی بل سازی کمیٹی میں قومی پارٹی کے ایک لیڈر بھی موجود تھے، جنہوں نے پہلے بل کی منظوری پر بی جے پی کو مبارکباد پیش کی اور بعد میں استعفیٰ دیا، یہ سب کھیل عوام کی سمجھ میں خوب آ رہا ہے۔

انہوں نے کہاکہ آج پنجاب کے کسان دہلی آئے ہیں۔ دہلی کے عوام کی طرف سے میں پنجاب سے آنے والے تمام کاشتکار بھائیوں کا خیر مقدم کرتا ہوں۔ اب وقت آگیا ہے کہ کھیتوں میں اگلی فصل بوائی ہو، تو کسان کو اپنے کھیتوں کے اندر رہنا چاہئے۔ لیکن اگر کسان کو کھیت چھوڑ کر دہلی میں آ کر مظاہرہ کرنا پڑ رہا ہے تو یہ ملک اور معاشرے کیلئے شرم کی بات ہے۔ پورے ملک میں صرف 6 فیصد فصل ایم ایس پی پر خریدی جاتی ہے، لہذا تمہاری حکومت پر لعنت ہے۔ کسان صرف 100 فیصد ایم ایس پی پر فصل خریدنے کا مطالبہ کر رہا ہے۔ پوری فصل ایم ایس پی پر حاصل کی جائے اور فصل کو ڈیڑھ گنا قیمت ملنی چاہئے۔

انہوں نے کہا کہ عام آدمی پارٹی کسان مخالف ان تینوں قوانین کی سختی سے مخالفت کرتی ہے۔ ہمارا پہلا مطالبہ یہ ہے کہ ان تینوں قوانین کو واپس لیا جائے۔ اس پر کوئی معاہدہ نہیں ہو سکتا۔ دوسرا مطالبہ ایم ایس پی پر قانون سازی کرنے کا ہے۔ اسے قانونی طور پر لازمی قرار دیا جانا چاہئے کہ 100 فیصد ایم ایس پی پر فصل خریدی جائے اور اس سے ڈیڑھ گنا لاگت ملے۔ وزیر اعلی نے کہا کہ ہم نے دہلی میں کیا ہے۔ اگر آپ کسانوں کیلئے یہ کرتے ہیں تو، پورے ملک میں کسانوں کی کھیتی باڑی میں کتنا اضافہ ہوگا۔ دہلی کے عوام کی جانب سے دہلی کے وزیر اعلی کی حیثیت سے میں کسانوں کے مطالبات کی حمایت کرتا ہوں۔

’آپ‘رکن پارلیمنٹ بھگ ونت مان نے کہا عام آدمی پارٹی پہلے دن سے ہی ان کالے قوانین کی مخالفت کر رہی ہے۔ ان مہلک قوانین کو کسی بھی حالت میں قبول نہیں کیا جاسکتا۔ یہ صرف کسان ہی نہیں، بلکہ عوام دشمن، پنجاب مخالف اور ملک دشمن قوانین ہیں، جو آمرانہ انداز میں مسلط کئے جا رہے ہیں۔ لیکن ’آپ‘ کسانوں کی جدوجہد کے ساتھ چٹان کی طرح کھڑی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close