بہار- جھارکھنڈتازہ ترین خبریں

بہار اسمبلی انتخابات: 28 اکتوبر سے ووٹنگ، 10نومبر کو نتائج کا اعلان

بہار میں تین مراحل میں اسمبلی انتخابات ہوں گے۔ پہلے مرحلہ میں 16 اضلاع کی 71 اسمبلی حلقوں میں 28 اکتوبر کو ووٹ ڈالے جائیں گے۔ دوسرے مرحلہ میں 17 اضلاع میں 94 سیٹوں پر تین نومبر کو ووٹ ڈالے جائیں گے۔ تیسرے مرحلہ میں 15 اضلاع میں 78 اضلاع میں سات نومبر کو ووٹ ڈالے جائیں گے۔ جبکہ ووٹوں کی گنتی 10 نومبر کو ہوگی۔

نئی دہلی، (یواین آئی)
کورونا وائرس کے سبب بہار قانون ساز اسمبلی کے لئے تین مراحل میں انتخابات ہونے جا رہے ہیں اور 28 اکتوبر، 3 نومبر اور 7 نومبر کو ووٹ ڈالے جائیں گے جبکہ ووٹوں کی گنتی 10 نومبر کو ہوگی۔

چیف الیکشن کمشنر سنیل اروڑا نے آج یہاں ایک پریس کانفرنس میں بہار کے اسمبلی انتخابات کی تاریخوں کا اعلان کیا۔ انہوں نے کہا کہ یہ انتخابات انتہائی غیرمعمولی حالات میں کرائے جارہے ہیں اوران حالات کو مدنظر رکھتے ہوئے سیکیورٹی کےساتھ ساتھ صحت سے متعلق پروٹوکول کے سلسلے میں بھی وسیع تر انتظامات کئے گئے ہیں۔ انتخابات کے اعلان کے ساتھ ہی ریاست میں ماڈل انتخابی ضابطہ اخلاق نافذ ہوگیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اسمبلی کی 243 نشستوں کے لئے انتخابات تین مراحل 28 اکتوبر، 3 نومبر اور 7 نومبر کو ہوں گے۔ تینوں مراحل کی ووٹوں کی گنتی ایک ہی دن یعنی 10 نومبر کو ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس کی وجہ سے قرنطین میں رہنے والے ووٹر یا تو پوسٹل بیلٹ کے ذریعے ووٹ دے سکتے ہیں یا وہ انتخابات کے آخری دن اپنے پولنگ بوتھ پرصحت کے عہدیداروں کی نگرانی میں ووٹ کریں گے۔

مسٹر اروڑہ نے کہا کہ ووٹنگ کے پہلے مرحلے کے لئے نوٹیفکیشن یکم اکتوبر کوجاری کی جائے گی ، پرچہ نامزدگی داخل کرنے کی آخری تاریخ 8 اکتوبر ہوگی جبکہ ان کی چھان بین 9 اکتوبر کو ہوگی۔ امیدوار 12 اکتوبر تک نام واپس لے سکیں گے اور 28 اکتوبر کو ووٹنگ ہوگی۔ دوسرے مرحلے کی نوٹیفکیشن 9 اکتوبر کو جاری کی جائے گی جبکہ پرچہ نامزدگی داخل کرنے کی آخری تاریخ 16 اکتوبر ہوگی۔ کاغذات نامزدگی کی جانچ 17 اکتوبر کو کی جائے گی، نام واپس لینے کی آخری تاریخ 19 اکتوبر ہوگی اور 3 نومبر کو ووٹ ڈالے جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ تیسرے مرحلے کے انتخابات کے لئے نوٹیفکیشن 13 اکتوبر کو جاری کی جائے گی۔ کاغذات نامزدگی 20 اکتوبر تک داخل کئے جائیں اور 21 اکتوبر کو کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال کی جائے گی۔ امیدوار 23 اکتوبر تک اپنے نام واپس لے سکیں گے اور 7 نومبر کو ووٹ ڈالے جائیں گے۔ مسٹر اروڑہ نے کہاکہ پہلے مرحلے میں انتخابات 16 اضلاع میں 71 اسمبلی نشستوں پر ہوں گے جن کے لئے 31 ہزار پولنگ مراکز قائم کئے گئے ہیں۔ دوسرے مرحلے میں 17 اضلاع کی 94 نشستوں پر پولنگ ہوگی جن کے لئے 42 ہزار پولنگ مراکز قائم کئے گئے ہیں۔ تیسرے مرحلے میں 15 اضلاع میں 78 اسمبلی نشستوں کے لئے ووٹ ڈالے جائیں گے جس کے لئے 33 ہزار 800 پولنگ مراکز قائم کئے گئے ہیں۔

مسٹر اروڑا نے بتایا کہ بہار قانون ساز اسمبلی کی مدت کار 29 اکتوبر کو ختم ہو رہی ہے۔ الیکشن کمیشن کی ٹیم نے گزشتہ 14 اور 15 ستمبر کو ریاست میں انتخابات کرانے کی صورتحال کا تفصیلی جائزہ لیا تھا اور اسی بنا پر انتخابات کا خاکہ تیار کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ حالات کے پیش نظر اس مرتبہ انتخابات صرف تین مراحل میں کرائے جا رہے ہیں اور اس کے لئے ایک لاکھ سے زیادہ پولنگ مراکزقائم کئے جائیں گے۔ ایک پولنگ مرکز میں ایک ہزار تک ہی ووٹر ووٹ ڈال سکیں گئے۔ اس سے پہلے یہ تعداد 1500 سو تک تھی۔

انہوں نے کہا کہ اس مرتبہ ووٹنگ کے وقت میں ایک گھنٹہ کا اضافہ کیا گیا ہے اور پولنگ صبح سات بجے شروع ہوکر شام چھ بجے تک ہوگی۔ اس سے پہلے یہ وقت صبح سات بجے سے شام پانچ بجے تک تھا۔ انہوں نے کہاکہ ریاست کے سات کروڑ 20 لاکھ رائے دہندگان کے لئے کورونا وبا کو مدِ نظر رکھتے ہوئے خصوصی انتظامات کئے گئے ہیں۔ انتخابات کے لئے سات لاکھ سینی ٹائزر، چھ لاکھ پی پی ای کٹس، 23 لاکھ دستانے اور 46 لاکھ ماسک کا انتظام کیا گیا ہے۔ ووٹ ڈالنے والے ہر ووٹر کو دستانہ دیا جائے گا۔ امیدواروں کو سہولت فراہم کرتے ہوئے، آف لائن کے ساتھ ساتھ آن لائن پرچہ نامزدگی داخل کا انتظام بھی کیا گیا ہے۔

امیدوار ضمانت رقم بھی آن لائن جمع کراسکتے ہیں۔ کورونا کی وبا کے باعث اس مرتبہ امیدوار کے ساتھ صرف دو افراد ہی جاسکتے ہیں۔ امیدواروں کو پرچہ نامزدگی داخل کرنے کے لئے جاتے ہوئے دو سے زیادہ گاڑیاں لے جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ گھر گھر تشہیر کے وقت بھی پانچ سے زیادہ افراد کو جمع نہیں ہونے دیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وبا کی وجہ سے پیدا شدہ حالات میں یہ دنیا میں سب سے بڑا الیکشن ہے جس کے لئے ہر پہلو کو مدنظر رکھتے ہوئے خصوصی انتظامات کئے گئے ہیں۔ کورونا کے پیش نظر اب تک 70 ممالک میں انتخابات ملتوی کردیے گئے ہیں۔

انتخابی عمل کے دوران مرکزی وزارت صحت و خاندانی بہبود اور وزارت داخلہ کے تمام پروٹوکول پر مکمل طور پر عمل کیا جائے گا۔ سوشل میڈیا کا غلط استعمال کرنے والے لوگوں پر خصوصی نظر رکھی جائے گی اور ان کے خلاف سخت کارروائی کی گئی ہے۔

نیوز ایجنسی (یو این آئی ان پٹ کے ساتھ)

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close