بہار- جھارکھنڈتازہ ترین خبریں

62فیصد ایم ایل اے مجرمانہ پس منظر کے حامل

جھارکھنڈ قانون ساز اسمبلی کے 79 ارکان اسمبلی میں سے 49 یعنی 62 فیصد ایم ایل اے مجرمانہ پس منظر کے ہیں اور ان میں سے 38 پر سنگین معاملے درج ہیں۔

یاد رہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کے منیش جیسوال سب سے امیر ایم ایل اے ہیں اور ان کے کل اثاثوں کی مالیت 18 کروڑ روپے سے زائد ہے جبکہ دوسرے اور تیسرے نمبر پر کانگریس کے دیویندر کمار سنگھ اور عالمگیر عالم ہیں جن کے مجموعی اثاثوں میں 10 کروڑ اور چھ کروڑ روپے سے زائد ہیں۔ ایسوسی ایشن فارڈیموکریٹک ریفارم اور جھارکھنڈ الیکشن واچ کی ایک رپورٹ کے مطابق، بی جے پی کے 36 میں سے 11 ممبران مجرمانہ پس منظر کے ہیں جبکہ کانگریس کے آٹھ ممبران اسمبلی میں سے پانچ مجرمانہ پس منظر کے ہیں۔ جھارکھنڈ مکتی مورچہ کے 18 ایم ایل اے میں سے 11 کے مجرمانہ پس منظر ہیں۔ جھارکھنڈ وکاس مورچہ کے آٹھ ممبران اسمبلی میں سے پانچ مجرمانہ پس منظر کے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق، موجودہ ایم ایل اے میں سے تین کے خلاف قتل کے مقدمات درج ہیں جبکہ 10 کے خلاف قتل کی کوشش کے مقدمات ہیں۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 79 میں سے 41، یعنی 52 فیصد کروڑ پتی ہیں، جن میں سے 21 بی جے پی کے اور نو جے ایم ایم، پانچ کانگریس اور تین جے وی ایم سے ہیں۔ ان ارکان اسمبلی کے اوسطا اثاثے 1.84 کروڑ روپے ہیں۔

قانون ساز اسمبلی کے نو ممبران نے اب تک اپنی آمدنی کا اعلان نہیں کیا ہے، جس میں سے امیت کمار منڈل کے کل اثاثے 5 کروڑ 49 لاکھ سے زیادہ ہیں لیکن انہوں نے انکم ٹیکس جمع نہیں کیا ہے۔ حلف نامے میں، 28 ارکان اسمبلی نے اپنی تعلیم کے بارے میں معلومات دی ہیں اور ان کی تعلیم آٹھویں سے بارہویں تک ہے جبکہ 50 ایم ایل اے گریجویٹ ہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close