اپنا دیشتازہ ترین خبریں

یوگی آدتیہ ناتھ پر بھڑکے سنجے سنگھ، ایف آئی آر درج کرنے کا مطالبہ

عام آدمی پارٹی کے راجیہ سبھا کے رکن سنجے سنگھ نے اترپردیش کے وزیراعلی یوگی آدتیہ ناتھ کی دہلی میں انتخابی تشہیر پر روک لگانے اور ان کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی الیکشن کمیشن سے مانگ کی۔

مسٹر سنگھ نے اتوار کو پارٹی ہیڈکوارٹر میں نامہ نگاروں سے بات چیت میں کہاکہ میں پہلے بھی کہہ چکا ہوں کہ لیڈر اور موضوع سے خالی بھارتیہ جنتا پارٹی دہلی میں انتخابات میں خلل ڈالنے کی سازش کررہی ہے اور جب میں نے یہ بات کہی تھی تو مجھ سے اس بات کے ثبوت مانگے گئے تھے۔ مسٹر سنگھ نے کہاکہ پہلے تو بی جے پی کے دو بڑے مرکزی وزیر فساد کرانے کے لئے اشتعال انگیز تقریر کرتے ہیں، اس کے بعد طمنچہ کلچر کے لوگ نکل کرآتے ہیں، کھل عام بندوقیں لہراتے ہیں اور پولیس کے سامنے دہلی کی سڑکوں پر گولیاں چلاتے ہیں اور پولیس کھڑی رہتی ہے۔ مسٹر سنگھ نے کہاکہ میں نے پہلے بھی کہا تھا کہ آج بھی کہتا ہوں کہ پولیس کے ہاتھ کسی اور نے نہیں وزیر داخلہ امت شاہ نے باندھے ہوئے ہیں۔

مسٹر سنجے سنگھ نے کہا کہ بی جے پی کے پاس الیکشن لڑنے کے لئے کوئی موضوع نہیں ہے، وہ ملک کی معیشت نہیں سنبھال پا رہی ہے اور اس کا ایک ثبوت بی جے پی کی طرف سے کل پیش کیا گیا بجٹ ہے جس کے بعد شیئر بازار میں سرمایہ کاروں کے چار لاکھ کروڑ روپے ڈوب گئے۔ سنسیکس گزشتہ گیارہ برسوں میں سب سے زیادہ پوائنٹ نیچے گر گیا۔ انہوں نے کہاکہ اترپردیش کے وزیراعلی دہلی میں آکر اشتعال انگیز تقریر کرہے ہیں، گولیاں چلانے کی بات کررہے ہیں۔ میری الیکشن کمیشن سے درخواست ہے کہ اشتعال انگیز تقریر کرنے کے لئے ان کے خلاف ایف آئی آر درج کی جائے اور ان کی انتخابی تشہیر پر روک لگائی جائے۔

خیال رہے کہ عام آدمی پارٹی نے وزیراعلی آدتیہ ناتھ کی طرف سے دیئے گئے بیان ’بولی سے نہیں مانے تو گولی سے تو مان جائیں گے‘ پر سخت اعتراض درج کرتے ہوئے الیکشن کمیشن کو خط لکھ کر مسٹر آدتیہ ناتھ کی دہلی میں انتخابی تشہیرپر فوری طور پر روک لگانے اور ایف آئی آر درج کرانے کی مانگ کی ہے۔ عام آدمی پارٹی نے الیکشن کمیشن سے ملاقات کا وقت مانگا ہے۔ الیکشن کمیشن سے وقت ملنے پر وہ دیگر لیڈروں کے ساتھ الیکشن کمیشن کے دفتر کے باہر پیر کو دھرنا دیں گے۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close