اترپردیشتازہ ترین خبریں

یوپی میں زبردست بارش سے معمولات زندگی درہم برہم، اب تک 44 لوگوں کی موت

اترپردیش میں جدا ہوتے مانسون کا مزاج ریاست کے خاص کر پوروانچل کے باشندوں کو اب تکلیف دینے لگا ہے۔ گذشتہ تین دنوں سے رک رک کر ہورہی بارش سے راجدھانی لکھنؤ کے علاوہ مشرقی اترپردیش کے زیادہ تر اضلاع میں معمولات زندگی پر خاص اثر پڑا ہے۔ اب تک زبردست بارش کی وجہ سے 44 لوگوں کی موت ہوگئی ہے۔ مسلسل ہو رہی اس بارش کے مدنظر انتظامیہ نے آج بھی انٹر تک کے سبھی اسکولوں میں چھٹی کا اعلان کر دیا ہے۔

محکمہ موسمیات کے مطابق بارش کے اس سلسلے کے اگلے 24 گھنٹوں تک جاری رہنے کے امکانات ہیں۔اس مدت میں کئی علاقوں میں بھاری بارش کے بھی امکانات ہیں۔موسم کے تلخ تیوروں کے مدنظر لکھنؤ،جونپور اور وارانسی سمیت کچھ اضلاع میں 12 ویں جماعت تک کے اسکولوں میں 27 اور 28 ستمبر کوچھٹی کا اعلان کیا گیا تھا۔ کم روشنی اور بارش کی وجہ سے سڑکوں پر گاڑیاں رینگتی نظر آئیں جبکہ پانی بھرنے کی وجہ سے کئی راہ گیر زخمی بھی ہوئے۔

بارش کی وجہ سے دیہی علاقوں میں عام طور سے سناٹا چھایا ہوا ہے۔ کیچڑ اور پھسلن بھرے راستوں نے لوگوں کو گھروں میں قید رہنے پرمجبور کردیا ہے۔ کھیتوں میں پانی بھرنے سے سبزیوں کی فصلوں پر کافی اثر پڑا ہے جس سے شہری علاقوں میں سبزیوں کی کمی کی قیمتیں آسمانی کی جانب دیکھ رہی ہیں۔

محکمہ موسمیات کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں میں جونپور میں 21.5سینٹی میٹر بارش درج کی گئی ہے جبکہ مرزا پور میں 12.9، رائےبریلی میں 11.7، پریاگ راج میں 11.4، باندہ میں 9.4،جھانسی میں 6.06، سنت کبیر نگر میں 10.2، گورکھپور میں 13.6،دیوریا میں 5.6، اوریا میں 4.6، لکھنؤ اور سلطان پور میں 5.4، سیتاپور میں 3.0 اور بلیا میں چار سینٹی میٹر بارش درج کی گئی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close