اپنا دیشتازہ ترین خبریں

یونیورسٹیوں کو ‘بھارت مخالف پروپیگنڈہ’ کے پلیٹ فارم کے طور پر استعمال نہیں کیا جاسکتا: ڈاکٹر جتیندر سنگھ

وزیر اعظم دفتر میں وزیر مملکت ڈاکٹر جتیندر سنگھ نے کہا کہ یونیورسٹیوں کو ‘بھارت مخالف پروپیگنڈہ’ کے پلیٹ فارم کے طور پر استعمال نہیں کیا جاسکتا۔ انہوں نے کہا کہ میں اظہار رائے کی آزادی کے حق میں ہوں مگر یونیورسٹوں میں بھارت مخالف پروپیگنڈے کی اجازت نہیں دی جاسکتی۔ ڈاکٹر جتیندر سنگھ ہفتہ کو جموں میں حفظان صحت سے متعلق اسکیم ‘آیوشمان بھارت’ کی لانچنگ کی تقریب کے حاشئے پر نامہ نگاروں کے سوالات کا جواب دے رہے تھے۔

جب ایک نامہ نگار نے ڈاکٹر جتیندر سنگھ سے جموں یونیورسٹی میں پیش آئے واقعہ جس میں شعبہ سیاسیات کے پروفیسر محمد تاج الدین پر الزام لگایا گیا ہے کہ انہوں نے بھارت کی جنگ آزادی کے مجاہد بھگت سنگھ کو دہشت گرد کہا ہے، کے بارے میں تاثرات مانگے تو ان کا کہنا تھا ‘میں نے معاملے پر جے این یو میں تفصیل سے بات کی ہے۔ میں نے کہا ہے کہ یونیورسٹی کو بھارت مخالف پروپیگنڈہ کے پلیٹ فارم کے طور پر استعمال نہیں کیا جاسکتا۔ میں خود اظہار رائے کی آزادی کے حق میں ہوں’۔ یہ پوچھے جانے پر کہ جموں یونیورسٹی کے پروفیسر کے خلاف کیا کاروائی ہوگی، تو ان کا جواب تھا ‘مجھے یقین ہے کہ متعلقہ اتھارٹی معاملے کا نوٹس لے گی، اس پر کوئی کاروائی عمل میں لانا میرے حد اختیار میں نہیں’۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close