اترپردیشتازہ ترین خبریں

ہنی ٹریپ معاملے میں کئی بی جے پی لیڈر شامل، سی ایم تک پہنچی رپورٹ

مدھیہ پردیش کے ہائی پروفائل ہنی ٹریپ معاملے کو لے کر پردیش کے محکمہ تعمیرات عامہ کے وزیر سجن سنگھ ورما نے بی جے پی لیڈروں پر سنگین الزام لگائے ہیں۔

انہوں نے اتوار کو اندور میں میڈیا سے بات چیت میں کہا کہ ہنی ٹریپ معاملے میں بی جے پی کے کئی لیڈر ہیں، جن کی رپورٹ وزیر اعلی کمل ناتھ تک پہنچ گئی ہے۔ اس معاملے میں جو بھی قصوروار پایا جائے گا، وہ کتنا بھی بڑا لیڈر یا افسر ہو، وہ بچ نہیں پائے گا۔ انہوں نے کہا کہ سب کو مدھیہ پردیش کی پولیس پر اعتماد رکھنا چاہئے، خاص طور پر ان لوگوں کو جو ہنی ٹریپ کیس میں سی بی آئی کی جانچ کی مانگ کر رہے ہیں۔ ایس آئی ٹی چیف سنجیوشمی منصفانہ تحقیقات کر رہے ہیں۔

پی ڈبلیو ڈی وزیر سجن سنگھ ورما نے میڈیا کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہنی ٹریپ معاملے کی آنچ مدھیہ پردیش سے لے کر مہاراشٹر اور دہلی تک پہنچی ہے۔ ایسے بہت سے چہرے بے نقاب ہوں گے۔ اس میں وہ عظیم لوگ بھی ہیں جو چال، چہرے اور کردار کو لے کر تقریر کرتے ہیں۔ اس معاملے میں بی جے پی کے کئی لوگوں کے نام سامنے آئے ہیں۔ تاہم، انہوں نے یہ بھی کہا کہ تمام ناموں کو جب تک جمع نہیں کرلیا جاتااس وقت تک نام لینا ٹھیک نہیں ہے، لیکن انہوں نے واضح کہا کہ وزیر اعلی نے ایس آئی ٹی کو کھلی چھوٹ دے رکھی ہے کہ بغیر کسی کی سفارش کے انکوائری کرو۔ ایس آئی ٹی اپنا کام کر رہی ہے۔

انہوں نے بتایا کہ ہنی ٹریپ کی ملزم خواتین نے حکام اور رہنماؤں کو بلیک میل کر سرکاری ٹینڈر لئے تھے، اس کی رپورٹ بن گئی ہے۔ اس میں شہری باڈی سے متعلق ٹینڈر لئے گئے ہیں۔دیگر محکموں میں بھی ٹینڈر لینے کی کوشش کی گئی تھی۔ معاملے کی تفتیش مکمل ہونے کے بعد تمام سفید پوش بے نقاب ہوں گے اور ان کے خلاف سخت اقدامات کئے جائیں گے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close