اپنا دیشتازہ ترین خبریں

ہندوستان سے حج 2020 کیلئے اب نہیں جائیں گے عازمین

مرکزی اقلیتی وزیر مختار عباس نقوی کا اعلان، بغیر کسی کٹوتی کے عازمین کے اکائونٹ میں واپس دی جائے گی پوری رقم

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
حج مشن 2020 پر جاری تزبزب ختم ہو گیا ہے۔ مرکزی اقلیتی وزیر مختار عباس نقوی نے آج یہ واضح کر دیا ہے کہ اس سال ہندوستانی عازمین مقدس سفر حج کیلئے روانہ نہیں ہوں گے۔ مختار عباس نقوی نے کہاکہ 2 لاکھ 13 ہزار درخواست دہندگان کے ذریعہ سفر حج کیلئے جمع کرائی گئی پوری رقم بغیر کسی کٹوتی کے واپس کرنے کا عمل آج سے شروع کردیا گیا ہے۔ یہ رقم آن لائن ڈی بی ٹی کے ذریعہ درخواست دہندگان کے اکاؤنٹ میں بھیجی جائے گی۔

مرکزی اقلیتی امور کے وزیر مختار عباس نقوی نے آج یہ اعلان سعودی عرب حکومت کی جانب سے بیرونی ممالک کے عازمین کو حج مشن 2020 کیلئے بلانے کی ممانعت کے فیصلے کے بعد یہاں پریس کانفرنس میں کیا۔ سعودی عرب حکومت کی جانب سے حج مشن 2020 کی تصویر واضح ہونے کے بعد آج مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے کہا کہ سعودی عرب حکومت کے اس فیصلے کا احترام کرتے ہوئے اور موجودہ صورتحال کے پیش نظر لوگوں کی صحت اور سلامتی کو ترجیح دیتے ہوئے یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ حج 2020 (1441 ھ) کیلئے ہندوستانی مسلمان سعودی عرب نہیں جائیں گے۔

قابل ذکر ہے کہ دنیا بھر میں پھیلے ہوئے کوویڈ۔19 کے خطرے کے پیش نظر سعودی عرب حکومت نے یہ باقائدہ اعلان کیا ہے کہ اس سال حج تو ہوگا، لیکن صرف سعودی عرب کے مقیم کم سے کم تعداد میں ہی لوگ حج کر سکیں گے۔ کسی بھی ملک سے مسلمانوں کو اس سال حج کیلئے نہیں بلایا جائے گا۔ جس کی سعودی عرب کی وزارت حج و عمرہ باقائدہ پریس ریلیز بھی جاری کر دی ہے۔ جبکہ کورونا کے خطرے کے پیش نظر سعودی عرب حکومت نے زیارت عمرہ پہلے ہی بند کیا ہوا ہے۔ وہیں خبر یہ بھی ہے کہ اس سال سعودی عرب میں مقیم عازمین حج کی تعداد محدود ہوگی جو تقرباً 10 ہزار افراد کی ہی ہو سکتی ہے۔

مرکزی وزیر مختار عباس نقوی نے کہا کہ گذشتہ روز سعودی عرب حکومت کے وزیر حج و عمرہ ڈاکٹر محمد صالح بن طاہر بن تین کا فون آیا تھا انہوں نے اس بار کورونا وبا کی وجہ اس بار حج 2020 کے لئے جانے والے عازمین حج کو سعودی عرب نہ بھیجنے کی تجویز دی ہے۔ نقوی نے کہا کہ چونکہ پوری دنیا کورونا کے سنگین چیلنجوں سے متاثر ہے اور اس کا اثر سعودی عرب میں بھی دیکھنے کو مل رہا ہے۔ جس کے چلتے اس سال ہندوستانی عازمین مقدس سفر حج پر نہیں بھیجے جائیں گے۔ تمام درخواست دہندگان کی سفر حج کیلئے جمع کرائی گئی تمام رقم بغیر کسی کٹوتی کے واپس کرنے کا عمل آج سے شروع کردیا گیا ہے۔

مرکزی اقلیتی امور کے وزیر نے بتایا کہ اس سال بھی محرم کے بغیر 2300 سے زیادہ مسلم خواتین نے حج پر جانے کے لئے درخواست دی تھی، ان خواتین کو حج 2021 میں اسی درخواست کی بنیاد پر سفر حج پر بھیجا جائے گا، نیز اگلے سال وہ تمام خواتین جو بغیر کسی محرم کے حج کیلئے درخواست دیں گی، انہیں بھی حج کے سفر پر بھیجا جائے گا۔وزیر موسوف نے کہاکہ 2019 میں 2 لاکھ ہندوستانی مسلمان حج کے مقدس سفر پر گئے تھے۔ جن میں 50 فیصد خاتون عازمین شامل تھیں۔ اس کے علاوہ حکومت ہند کی جانب سے 2018 میں شروع ہونے والے بغیر محرم خواتین کے حج پر جانے کے عمل کے تحت حج پر جانے والی خواتین کی تعداد اب تک 3040 ہوگئی ہے۔

مرکزی وزیر برائے اقلیتی امور مختار عباس نقوی نے کہا کہ کل دیر رات سعودی عرب کے وزارت حج و عمرہ نے ایک ریلیز جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ عالمی سطح پر کورونا کی وبا کی وجہ سے مذہبی مقامات پر بھیڑ بھاڑ والے تمام پروگراموں کو ملتوی کردیا گیا ہے۔ ساتھ ہی یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ مختلف ممالک کے جو لوگ اس وقت سعودی عرب میں رہائش پذیر ہیں وہی سوشل ڈسٹینگ پر عمل کرتے ہوئے فریضہ حج ادا کریں گے۔

غرض یہ کہ اب جبکہ حج 2020 کیلئے ہندوستان کے عازمین کا سفر حج ملتوی ہو گیا ہے تو عازمین کو بغیر کسی کینسل فارم بھرے ان کی پوری رقم بغیر کسی کٹوتی کے واپس مل جائے گی۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close