تازہ ترین خبریںکھیل کھلاڑی

ہندوستان بمقابلہ نیوزی لینڈ: رہانے اور هنوما پر ٹیسٹ بچانے کی ذمہ داری

تیز گیندباز ایشانت شرما کے پانچ وکٹ لینے کے باوجود دنیا کی نمبر ایک ٹیم ہندوستان، میزبان نیوزی لینڈ کے خلاف پہلے کرکٹ ٹیسٹ کے تیسرے دن اتوار کے روز سخت مشکل سے دوچار ہوگئی ہے۔ہندوستان نے اپنی دوسری اننگز میں اپنے چار وکٹ 144 رن پر گنوا دیئے ہیں اور وہ نیوزی لینڈ کی برتری سے 39 رن پیچھے ہے۔ ٹیم انڈیا کی امیدیں اب ناٹ آؤٹ بلے بازوں نائب کپتان اجنکیا رہانے اور هنوما وهاري پر ٹکی ہیں۔

ہندوستان نے اپنی پہلی اننگز میں 165 رن بنائے جبکہ نیوزی لینڈ نے پانچ وکٹ پر 216 رن سے آگے کھیلتے ہوئے پہلی اننگز میں 348 رن بنا کر 183 رن کی اہم برتری حاصل کر لی۔ دوسری اننگز میں بھی ہندوستانی بلے بازوں نے مایوس کن مظاہرہ کیا اور اسٹمپ تک اپنے چار وکٹ گنوا دیے۔ پرتھوی شا 14، چتیشور پجارا 11، مینک اگروال 58 اور کپتان وراٹ کوہلی 19 رن بنا کر آؤٹ ہوئے۔ اسٹمپ پر نائب کپتان اجنکیا رہانے 25 اور هنوما وهاري 15 رن بنا کر کریز پرموجود تھے۔ ان دونوں بلے بازوں کو چوتھے دن ہندوستانی اننگز کو سنبھالنا ہوگا تبھی ہندوستان کے لئے کچھ امیدیں بن پائیں گی۔ بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز ٹرینٹ بولٹ نے 27 رن پر تین وکٹ لے کر ہندوستانی اننگز کوہلاکر رکھ دیا۔

اس سے پہلے بي جے واٹلنگ نے 14 اور کالن ڈی گریڈهوم نے چار رن سے صبح اپنی اننگز کو آگے بڑھایا۔ گرینڈهوم نے 43، پہلا ٹسٹ کھیل رہے کائل جیمیسن نے 44 اور آخری بلے باز بولٹ نے 38 رن بنائے۔ کیوی اننگز 348 رن کے مضبوط اسکور پر ختم ہوئی۔ ایشانت نے 68 رن پر پانچ وکٹ اور آف اسپنر روی چندرن نے 99 رن پر تین وکٹ لئے جبکہ جسپريت بمراه اور محمد سمیع کو ایک ایک وکٹ ملا۔

صبح ہندوستانی گیند باز کیوی اننگز کو جلدی نہیں سمیٹ سکے جبکہ پہلی اننگز میں پچھڑنے کے باوجود ٹاپ ہندوستانی بلے بازوں نے وکٹ پر ٹکنے کا جذبہ نہیں دکھایا۔ کپتان وراٹ کوہلی نے سب سے زیادہ مایوس کیا۔ اس دورے میں فارم حاصل کرنے متلاشی وراٹ پہلی اننگز میں سات گیندوں میں دو رن بنا پائے تھے جبکہ دوسری اننگز میں 43 گیندوں میں تین چوکوں کی مدد سے 19 رن ہی بنا سکے۔

ہندوستان کی شروعات دوسری اننگز میں بھی خراب رہی۔ پرتھوی شا 30 گیندوں میں دو چوکوں کی مدد سے 14 رن بنا کر بولٹ کا شکار بن گئے۔ پرتھوی نے پہلی اننگز میں 16 رن بنائے تھے اور دوسری اننگز میں بھی انہوں نے مایوس کیا۔ ہندوستان کا پہلا وکٹ 27 کے اسکور پر گرا۔ مینک اگروال اور پجارا نے دوسرے وکٹ کے لئے 51 رن کی ساجھےداری کی لیکن اس کے بعد ہندوستان نے 35 رن کے وقفے میں تین وکٹ گنوائے اور وہ سخت مشکل میں پھنس گیا۔

بولٹ نے پجارا کو بولڈ کیا اور ہندوستان کا دوسرا وکٹ 78 کے اسکور پر گر گیا۔ پجارا نے 81 گیندیں کھیل کر 11 رن بنائے۔ مینک جم کر کھیل رہے تھے اور اپنی نصف سنچری مکمل کر چکے تھے لیکن ٹم ساؤتھی نے مینک کو وکٹ کیپر بي جے واٹلنگ کے ہاتھوں کیچ کراکر ہندوستان کو تیسرا جھٹکا دے دیا۔ مینک کا وکٹ 96 کے اسکور پر گرا۔ مینک نے 99 گیندوں پر 58 رن کی شاندار اننگز میں سات چوکے اور ایک چھکا لگایا۔

ہندوستان کو اپنے کپتان وراٹ سے کافی امیدیں تھیں کہ وہ ٹیم کو بحران سے باہر نکالیں لیکن وراٹ ٹیم کو مشکل میں چھوڑ کر پویلین لوٹ گئے۔ وراٹ پہلی اننگز میں سلپ میں کیچ ہوگئے تھے اور اس بار بولٹ کی گیند پر انہوں نے وکٹ کیپر کو کیچ دے دیا۔ وراٹ کا وکٹ 113 کے اسکور پر گرا۔ وراٹ کا آؤٹ ہونے سے ٹیم کو بڑا دھچکا تھا۔ رہانے اور هنوما نے اس کے بعد 118 گیندوں پر 31 رن کی ناٹ آؤٹ ساجھےداری کرکے ٹیم کو سنبھالے رکھا۔ اسٹمپ پر رہانے 67 گیندوں میں چار چوکوں کی مدد سے 25 اور هنوما 70 گیندوں میں دو چوکوں کے ساتھ 15 رن بنا کر کریز پر موجود تھے۔

اس سے پہلے صبح نیوزی لینڈ نے اپنی اننگز کو پانچ وکٹ پر 216 رن سے آگے بڑھایا۔ میزبان ٹیم کے نچلے آرڈر کے بلے بازوں نے مضبوطی کے ساتھ بلے بازی کی اور ہندوستانی گیند بازوں کو مایوس کیا۔ بي جے واٹلنگ نے 14 اور کولن ڈی گرینڈهوم نے چار رن سے اپنی اننگز کو آگے بڑھایا۔ ہندوستان کو چھٹی کامیابی جلد ہی مل گئی۔ وکٹ کے لئے جدوجہد کر رہے جسپريت بمراه نے واٹلنگ کو وکٹ کیپر رشبھ پنت کے ہاتھوں کیچ کرادیا۔واٹلنگ اپنے اسکور میں کوئی اضافہ نہیں کر سکے اور نیوزی لینڈ کا چھٹا وکٹ کل کے اسکور پر ہی گر گیا۔

ایشانت نے ٹم ساؤتھی کو محمد سمیع کے ہاتھوں کیچ کراکر اپنا چوتھا وکٹ لے لیا۔ ساؤتھی چھ رن ہی بنا سکے اور نیوزی لینڈ نے ساتواں وکٹ 225 کے اسکور پر گنوا دیا۔ اس وقت لگ رہا تھا کہ ہندوستانی گیند باز نیوزی لینڈ کی اننگز کو جلد ہی سمیٹ دیں گے لیکن گرینڈهوم اور پہلا ٹیسٹ کھیل رہے جیمیسن نے آٹھویں وکٹ کے لئے 71 رن کی ساجھےداری کرکے نیوزی لینڈ کو مضبوط پوزیشن میں پہنچا دیا۔

آف اسپنر اشون نے جیمیسن کو آؤٹ کرکے اس شراکت داری کو توڑا۔ جیمیسن نے 45 گیندوں پر 44 رن میں ایک چوکا اور چار چھکے لگائے اور اپنے پہلے ٹیسٹ کو یادگار بنا دیا۔ انہوں نے ہندوستان کی پہلی اننگز میں چار وکٹ بھی لئے تھے۔ اشون نے پھر گرینڈهوم کو بھی آؤٹ کیا۔ نیوزی لینڈ کا نواں وکٹ 310 کے اسکور پر گرا۔ گرینڈهوم نے 74 گیندوں پر 43 رن میں پانچ چوکے لگائے۔

بائیں ہاتھ کے تیز گیند باز بولٹ نے پھر سخت حملہ کرتے ہوئے صرف 24 گیندوں پر پانچ چوکوں اور ایک چھکے کی مدد سے 38 رن بنائے اور نیوزی لینڈ کو 348 تک پہنچا دیا۔ بولٹ اور اعجاز پٹیل نے آخری وکٹ کے لئے 38 رن جوڑے اور یہ تمام رن بولٹ نے بنائے۔ ایشانت نے بولٹ کو پنت کے ہاتھوں کیچ کراکر کیوی اننگز کا خاتمہ کیا۔ ایشانت نے 22.2 اوور میں 68 رن دے کر پانچ وکٹ لئے اور اپنے وکٹوں کی تعداد 297 پہنچا دی۔ اشون نے 29 اوور میں 99 رن دے کر تین وکٹ حاصل کئے۔ بمراه کو 26 اوور میں 88 رن پر ایک وکٹ اور سمیع کو 23 اوور میں 91 رن پر ایک وکٹ ملا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close