اپنا دیشتازہ ترین خبریں

ہندوستان اور چین کے فوجیوں میں جھڑپ، کرنل سمیت دو جوان شہید

ہندوستان اور چین کے فوجیوں کے درمیان مشرقی لداخ میں ایک زبردست جھڑپ ہوئی جسمیں ایک کرنل اور دوفوجی شہید ہوگئے۔ لیکن فوجی ذرائع سے معلوم ہوا کہ کرنل کوگولی سے نہیں ہلاک کیا گیا بلکہ دو نوں ملکوں کے فوجیوں کے درمیان ہاتھائی ہوئی جس دوران یہ حادثہ پیش أیا۔

ذرائع سے معلوم ہوا کہ ہاتھاپائی کے دوران لاٹھیوں اور پتھروں کا بھی استعمال ہوا۔ اس وقت دونوں ملکو ں کے اعلی فوجی جنرل حالات پر قابوپانے کے لئے رابطے میں رہے۔ یہ بھی پتہ چلا ہے کہ چین کے کئی فوجی یا سپاہی اس تصادم کے دوران ہلاک ہوگئے ہیں۔ فوجی کرنل کا تعلق بہار رجمنٹس سے ہے۔

فوج کے ابتدائی بیان میں کہا گیا ہے کہ گلوان وادی میں دونوں افواج کے جوانوں کے پیچھے ہٹنے کے عمل کے دوران افواج کے درمیان تشدد ہوا ہے جس میں دونوں طرف کے فوجی ہلاک ہوئے ہیں۔ فوج نے تصدیق کی ہے کہ اس دوران ایک افسر اور دو جوان شہید ہو گئے۔ دونوں فریقوں کے سینئر فوجی افسر گلوان وادی میں بات چیت کر رہے ہیں جس سے تناؤ کو دور کرکے حالات کو معمول پر لانے کی کوشش کی جارہی ہے۔ فوج نے واضح طورپر کہا ہے کہ جھڑپ میں دونوں طرف کے فوجی مارے گئے ہیں حالانکہ یہ نہیں بتایا گیا ہے کہ چین کے کتنے فوجی ہلاک ہوئے ہیں۔ فوج نے یہ بھی واضح کیا کہ جھڑپ کے دوران فائرنگ نہیں ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ مشرقی لداخ میں پچھلے ایک مہینے سے بھی زیادہ وقت سے دونوں افواج کے درمیان شدید تعطل بنا ہوا ہے۔ اس تعطل کو دور کرنے کے لئے پچھلے کچھ ہفتوں میں دونوں افواج کے سینئر افسران کے درمیان مسلسل میٹنگیں ہورہی ہیں۔گزشتہ چھ جون کو ہوئے لیفٹننٹ جنرل سطح کے مذاکرات کے بعد دونوں افواج نے اپنے فوجیوں کو کچھ پیچھے ہٹانے کا فیصلہ کیا تھا۔پیچھے ہٹنے کے عمل دوران ہی یہ جھڑپ ہوئی ہے۔ پچھلے ایک مہینے میں دونوں افواج نے حالیہ لائن آف کنٹرول کے نزدیک بھاری گاڑیوں، آلات اور جوانوں کی تعیناتی بڑھا دی ہے۔ دونوں ملکوں کی سیاسی قیادت کی جانب سے مسلسل کہا جارہا ہے کہ اس مسئلے کا حل بات چیت کے ذریعہ نکالا جائیگا۔ دونوں افواج کے افسروں کے درمیان پیر کو بھی ایک میٹنگ ہوئی تھی۔دونوں افواج کے درمیان ہوئی جھڑپ کے بعد بات چیت کے ذریعہ تعطل کو دور کرنے کی کوششوں کو ٹھیس لگ سکتی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close