تازہ ترین خبریںدلی این سی آر

ہریانہ کے انتخابی میدان میں کودی بی ایس پی، 41 امیدواروں کے ناموں کا اعلان

ہریانہ میں انتخابات سے پہلے اتحاد کو لے کر کئی سیاسی تجربہ کرنے والی بہوجن سماج پارٹی بھی اتوار کو اپنے دم پر انتخابی میدان میں کود گئی۔ بی ایس پی نے پہلے مرحلے میں 41 امیدواروں کو میدان میں اتارا ہے۔

یہ فہرست جاری کرنے سے پہلے بی ایس پی ہریانہ میں اتحاد کو لے کر کئی تجربہ کر چکی ہے۔ بی ایس پی نے ریاست میں اب تک اتحاد کے سہارے لوک سبھا انتخابات کے بعد کئی مرتبہ لڑی ہے لیکن اسمبلی انتخابات ایک بار بھی نہیں لڑا ہے۔ اس مرتبہ اسمبلی انتخابات کے موقع پر جننائک جنتا پارٹی سے اتحاد کے بعد یہ کہا جا رہا تھا کہ بی ایس پی پہلی بار اتحاد کے سہارے اسمبلی انتخابات لڑے گی لیکن بی ایس پی نے محض 27 دن میں ہی جے جے پی کے ساتھ اتحاد توڑ دیا۔جے جے پی سے پہلے بی ایس پی نے لوک تنتر سرکشاپارٹی اور اس سے پہلے انڈین نیشنل لوک دل کے ساتھ اتحاد کیا تھا۔ تین سیاسی اتحاد توڑنے کا الزام مول لینے کے بعد بی ایس پی نے آج اپنے طور پر انتخابی تال ٹھوک دی ہے۔

بی ایس پی نے پرتھلا سے سریندر وششٹھ، پانی پت دیہی سے بلکار سنگھ ملک، سوہنا سے جاوید احمد، جگادھری سے آدرش پال سنگھ، رادور سے چودھری مہی پال سنگھ، اسندھ سے نریندر رانا، ہتھین سے چودھری طیب حسین، این آئی ٹی فرید آباد سے حاجی کرامت علی، بلبھ گڑھ سے ارون بسلا، نارائن گڑھ سے مدن پال رانا، ساڈھورا سے چودھری سہی رام، ملانا سے کرشن داس میہمی، انبالہ شہر سے رویندر سنگھ، اندری سے ہوا سنگھ، یمنانگر سے یوگیش کنبوج، کھرکھودا شادی لال تنور، کلانور سے پروفیسر کشمیری بودھ، ہانسی سے سریندر شرما کو پارٹی امیدوار بنایا گیا ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close