اپنا دیشتازہ ترین خبریں

گری راج سنگھ کی دھمکی: قبر کے لیے تین ہاتھ جگہ چاہیے تو ’وندے ماترم‘ گانا ہوگا

فرقہ وارانہ متنازعہ بیانات سے ہمیشہ سرخیوں میں رہنے والے بی جے پی لیڈر گری راج سنگھ ایک بار پھر مسلمانوں کے خلاف زہرافشانی کرتے ہوئے مسلمانوں کو ’وندے ماترم‘ گانے کے لئے دھمکی دی ہے. انہوں نے دھمکاتے ہوئے کہا کہ کہ ’’اگر قبر کے لیے تین ہاتھ جگہ چاہیے تو اس ملک میں وندے ماترم گانا ہوگا اور بھارت ماتا کی جے کہنا ہوگا۔‘‘

بتا دیں کہ بہار کی بیگوسرائے سیٹ سے گری راج سنگھ بی جے پی کے امیدوار ہیں. انھوں نے بیگوسرائے کے انتخابی جلسہ میں خطاب کرتے ہوئے یہ زہرافشانی کی ہے، انہوں نے مسلمانوں کو دھمکی دیتے ہوئے کہا اگر قبر کے لئے تین ہاتھ جگہ چاہئے تو اس ملک میں ’وندے ماترم‘ گانا ہوگا اور ’بھارت ماتا کی جے‘ کہنا ہوگا۔ حد تو تب ہوگئی جب بی جے پی صدر امت شاہ اسٹیج پر موجود ہوتے ہوئے بھی اس بیان کو سن کر کچھ نہیں کہا لیکن اب دیکھنے والی بات یہ ہے کہ ان کے اس بیان پر بی جے پی کیا قدم اٹھاتی ہے.

گری راج کے اس بیان کے آنے کے بعد سب سے زیادہ تلخ حملہ آر جے ڈی لیڈر اور بہار کے سابق نائب وزیراعلیٰ تیجسوی یادو نے کیا ہے۔ انھوں نے ایک ٹوئٹ کے ذریعہ نہ صرف گری راج سنگھ بلکہ وزیراعلیٰ نتیش کمار کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ انوں نے لکھا کہ ’’نتیش کمار کی نام نہاد گاندھی گری کی ایسی تیسی کرتا ’وِش راج‘ سنگھ۔ نتیش کمار اس کا ہاتھ پکڑے جھولی پھیلا کر ووٹ مانگ رہے ہیں۔‘‘ ساتھ ہی انھوں نے یہ بھی لکھا ہے کہ ’’کہاں گیا نتیش کمار کا ضمیر۔ خبردار چاچا، آگے سے باپو گاندھی کا نام لیا تو… شرم تو نہیں آرہی ہوگی۔‘‘

یاد رہے کہ بیگوسرائے کی اس سیٹ پر کافی سخت مقابلہ دیکھنے کو مل رہا ہے۔ یہاں لوگ سہ رخی مقابلے کی امید کر رہے ہیں کیونکہ بی جے پی امیدوار گری راج سنگھ کو ایک طرف آر جے ڈی امیدوار تنویر حسن ٹکر دے رہے ہیں تو دوسری طرف سی پی آئی نے جے این یو طلبا یونین کے سابق صدر کنہیا کمار کو اپنا امیدوار بنایا ہے۔ جس کا فیصلہ 29 اپریل کو بیگوسرائے کے رائے دہندگان اپنی حق رائے دہی کا استمعال کرکے کریں گے.

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close