اپنا دیشتازہ ترین خبریں

گجرات: ہندو املاک کی قیمت زیادہ مسلم کی کم

’ڈسٹرب ایریا ایکٹ‘ کے تحت پراپرٹی مسلمانوں کو بیچنے پر اعتراض

گجرات کے وڈودرا علاقہ میں ایک شخص نے پڑوسیوں کی مخالفت کی وجہ سے مسلم خاندان کو مکان بیچنے سے انکار کر دیا۔ معاملہ شہر کے وسنا علاقہ کا ہے ۔میڈیا رپورٹ کے مطابق پڑوسیوں نے دلیل دی کہ اس سے علاقہ میں پرا پرٹی کی قیمت گر جائے گی۔ سمرپن سو سائیٹی کے لوگوں نے ’ڈسٹرب ایریا یکٹ کا حوالہ دیتے ہوئے پراپرٹی مسلم خاندان کو بیچنے پر اعتراض ظاہر کیا۔

سوسائٹی میں رہنے والے لو گوں کا کہنا ہے کہ یہ قانون ہندو اکثریتی علاقوں میں مسلموں اور مسلم اکثریتی علاقوں میں ہندو کو پراپرٹی فروخت کرنے کی اجازت تب تک نہیں دیتا جب تک اس کے آس پاس رہنے والے لوگ متفق نہ ہوں۔ علاقہ میں قانون و انتظام یقینی کرنے کے لئے پو لیس بھی تعینات تھی۔ سوسائٹی میں تقریباً 170 مکان ہیں، جن میں سے دو 2017 میں مسلموں کو فروخت کئے گئے تھے اور ایک دوسرا مکان 99 سال کے لئے لیز پر دیا گیا تھا۔
جے پی رو ڈ پو لیس تھا نہ حلقہ میں آنے والی سمرپن سو سائٹی (سٹی سروے نمبر522 سے 527 ،680 سے 712) کو 2014 میں ’ڈسٹرب ایریا ‘ قرار دے دیا گیا تھا۔ اس کے مطابق کسی بھی پرا پرٹی کے لین دین سے پہلے نو آبجیکشن سرٹیفکیٹ لینا ضروری ہوگا۔ یہ این او سی سوسائٹی کے سربراہ جاری کریں گے، جس پر کلکٹر کی رضامندی بھی ضروری ہوگی۔

پراپرٹی کا سودا رد کرنے والے مہیش پلا نی نے جب اپنے مکان کو فروخت کر نے کے لئے پو لیس ویریفکیشن کے لئے درخواست دی تھی لیکن خریدار مسلم ہو نے کی وجہ سے سو سائٹی کے لو گوں نے مکان دکھانے ہی نہیں دیا ۔پلا نی نے دو دن پہلے ڈیل رد کر دی۔ انہوں نے کہا چو نکہ خریدار بے حد قریبی دوست کے توسط سے آئے تھے ،اس لئے مجھے پرا پرٹی دکھا نے میں کچھ بھی غلط نہیں محسوس ہوا ۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close