اپنا دیشتازہ ترین خبریں

گجرات فساد: بلقیس بانو کو 50 لاکھ روپئے کا معاوضہ، گھر اور ملازمت دینے کا حکم

بلقیس بانو کیس میں اہم فیصلہ سناتے ہوئے سپریم کورٹ نے منگل کو اپنے عبوری حکم میں گجرات حکومت کو 2002 کے گجرات فسادات کے دوران اجتماعی عصمت دری کا شکار ہوئی بلقیس یعقوب رسول عرف بلقیس بانو کو پچاس لاکھ روپے کی مالی مدد دینے، سرکاری نوکری اور رہائش کی سہولت فراہم کرنے کا حکم دیا ہے۔ جس کے لئے گجرات حکومت کو دو ہفتہ کا وقت دیا گیا ہے.

آپ کی جانکاری کے لئے بتا دیں کہ گجرات فساد کے دوران بچ کر بھاگ رہی بلقیس اور ان کی فیملی پر 3 مارچ 2002 کو ہتھیاروں سے لیس فسادیوں نے بلقیس کے ساتھ اجتماعی عصمت دری بھی کی تھی۔۔ اتنا ہی نہیں، جب بلقیس نے پولیس سے کاروائی کی گزارش کی تو پولیس نے اسے سنگین نتائج بھگتنے کی دھمکی دے کربھگا دیا تھا۔ انصاف کے لیے بلقیس نے کئی عدالتوں کے دروازے کھٹکھٹائے۔ بالآخر 17 سال بعد سپریم کورٹ نے ان کے حق میں فیصلہ سنایا۔

سپریم کورٹ نے بلقیس بانو کو پچاس لاکھ روپے کی مالی مدد دینے، سرکاری ملازمت اور رہائش کی سہولت دینے کا حکم دیا ہے۔ عدالت کا کہنا ہے کہ بلقیس بانو 2002 کے واقعہ کے بعد خانہ بدوشی کی زندگی گذار رہی ہیں۔ عدالت عظمی نے کہا کہ ہم عرضی گذار بلقیس بانو کو پچاس لاکھ روپے کی مالی مدد دینے کا حکم دیتے ہیں۔

گجرات حکومت نے عدالت عظمی کو بتایا کہ بلقیس بانو اجتماعی عصمت دری معاملے میں ثبوتوں کے ساتھ گڑبڑی کرنے کی کوشش کرنے والے قصور وار افسران میں سے بیشتر کے پنشن فوائد کو پوری طرح ختم کردیا گیا ہے اور ایک آئی پی ایس افسر کو دو رینک پیچھے کردیا گیا ہے۔ اس سے پہلے سپریم کورٹ نے پانچ لاکھ روپے کی مدد دینے کا حکم دیا تھا لیکن بلقیس بانو نے اسے لینے سے انکار کردیا تھا اور معاوضہ کی رقم میں اضافہ کا مطالبہ کرتے ہوئے عرضی دائر کی تھی۔

ٹیگز
اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close