اپنا دیشتازہ ترین خبریں

کیا ’لیزر گن‘ کے نشانے پر تھے راہل گاندھی..؟ وزارت داخلہ نے دیا یہ جواب

وزارت داخلہ نے اترپردیش کے ضلع امیٹھی میں کانگریس کے صدر راہل گاندھی کی سکیورٹی میں چوک کے مبینہ معاملے میں صورتحال کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ مسٹر گاندھی کے چہرے پر دکھائی دینے والی ’ہری روشنی‘ لیزر نہیں بلکہ کانگریس کے فوٹوگرافر کے موبائل سے نکلنے والی روشنی ہے۔

کانگریس نے آج کہا کہ بدھ کے روز امیٹھی کے پارلیمانی حلقے سے پرچہ نامزدگی داخل کرنے کے بعد جب مسٹر راہل گاندھی صحافیوں سے گفتگو کررہے تھے تو اس وقت ان کے چہرے، سر اور ماتھے پر سات بار ہرے رنگ کی لیزر شعائیں دیکھی گئیں۔ کانگریس نے اسے مسٹر گاندھی کی سکیورٹی میں چوک قرار دیتے ہوئے وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ کو خط لکھ کر تفتیش کرائے جانے کا مطالبہ کیا تھا۔

وزارت داخلہ کے ترجمان نے کہا کہ ابھی تک وزارت کو کانگریس کی جانب سے اس طرح کا خط موصول نہیں ہوا ہے لیکن جونہی اس طرح کی رپورٹ ان کے علم میں آئی انہوں نے خصوصی سکیورٹی دستہ (ایس پی جی) کے ڈائریکٹر سے کہا کہ وہ ’ہری روشنی‘ کی حقیقی صورتحال کا پتہ لگائیں۔ ایس پی جی کے ڈائریکٹر نے وزارت کو بتایا کہ ویڈیو کو باریکی سے جانچا، پرکھا گیا ہے اور اس میں نظر آنے والی’ہری روشنی‘اس وقت ویڈیو بنانے والے کانگریس کے فوٹوگرافر کے کیمرے سے نکل رہی تھی۔

ڈائریکٹر نے وزارت کو یہ بھی بتایا کہ یہ اطلاع مسٹر گاندھی کے پرائیویٹ اسٹاف کو بھی دے دی گئی ہے۔ ڈائریکٹر نے تصدیق کی ہے کہ یہ پہلو سکیورٹی سے متعلق نہیں ہے۔ قابل ذکر ہے کہ مسٹر گاندھی کو پہلےسے ہی ایس پی جی سکیورٹی حاصل ہے اور ایس پی جی کمانڈوں ان کے ساتھ رہتے ہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close