تازہ ترین خبریںدلی این سی آر

کورونا کا خطرہ ٹلا نہیں، حکومت کی گائیڈ لائن پر ضرور عمل کریں

مفتی مکرم مغربی کنارے کے الحاق سے صہیونی حکومت کو روکا جانے کا کیا مطالبہ

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
شاہی فتح پوری مسجد کے امام مولانا ڈاکٹر مفتی مکرم نے آج کہاکہ کورونا کے خطرات ابھی کم نہیں ہوئے ہیں۔ مسجدوں میں آنے والے سرکاری ہدایتوں پر ضرور عمل کریں۔ مسلمانوں کو اعلی کردار پیش کرتے ہوئے لاپرواہی نہیں کرنی چاہئے۔ ان حالات میں گھر میں نماز پڑھنے کی بھی رخصت ہے چونکہ یہ شرعی عذر ہے۔ مولانا مفتی مکرم احمد آج شاہی فتح پوری مسجد میں نماز جمعہ سے قبل خطاب کر رہے تھے۔

مفتی مکرم نے اپنے خطاب میں کہاکہ ملک میں ان لاک- 2 کا عمل چل رہا ہے، جس میں حکومت کی جانب سے بہت سے کاموں میں مزید مراعات کا اعلان کیا گیا ہے لیکن کورونا کا خطرہ ابھی باقی ہے۔ ہندوستان میں ممبئی اور دہلی کی حالت زیادہ خراب ہے۔ پچھلے بیس دن مین تین لاکھ سے زیادہ کیس بڑھے ہیں اور آج چھ لاکھ سے بھی زیادہ تعداد پہنچ چکی ہے۔ انہوں نے کہاکہ یہ راحت کی بات ہے کہ صحتمند ہونے والے مریضوں کا فیصد بھی بڑھا ہے لیکن کورونا کی کوئی دوا نہیں ہے اور مرض بہت تیزی سے حملہ آور ہوتا ہے اس لئے احتیاط کی ضرورت ہے۔ مارکیٹ کھلی ہوئی ہے لیکن بہت سی دکانیں احتیاط کی خاطر بند ہیں۔

واضح رہے کہ کورونا کے بڑھتے خطرے کے پیش نظر 4 جولائی تک بند کی گئی شاہی جامع مسجد اور شاہی فتح پوری مسجد کل کھلنے والی ہیں۔ ان کو پہلے 8 جون سے تمام عبادگاہوں کے ساتھ عوام کیلئے کھول دیا گیا تھا۔ لیکن کورونا کے بڑھتے کیسوں کو دیکھتے ہوئے بطور احتیاط ان مساجد کو عوام کیلئے بند کر دیا تھا۔ فی الحال امام، موذن سمیت مسجد میں اندر موجود چند افراد ہی معاشرتی فاصلے سے نماز ادا کر رہے ہیں۔

مولانا مفتی مکرم نے فلسطین پر کئے ظلم کی بھی شدید مذمت کی۔ انہوں نے کہا کہ صہیونی ریاست کا ظلم اور نہتے فلسطینیوں پر حملے روز بروز بڑھتے جا رہے ہیں ہم اس کی شدید مذمت کرتے ہیں افسوس یہ ہے کہ وہ یو این او کی بھی پرواہ نہیں کرتے۔ غرب اردن کو اسرائیل کے ساتھ ملانے کا منصوبہ کسی بھی صورت میں قابل قبول نہیں ہے۔ مفتی مکرم نے کہاکہ اقوام متحدہ سلامتی کونسل، یوروپی یونین اور عرب ممالک و مسلم ممالک اور دنیا کی بڑی طاقتوں کو اس اقدام پر سخت ایکشن لینے کی ضرورت ہے۔ اسرائیل کے ساتھ فلسطینی علاقوں کا الحاق ہرگز نہیں ہونا چاہئے۔امریکہ پر سب کو اثر ڈالنا چاہئے کہ وہ اس اقدام کی حمایت نہ کرے اور فلسطین کی خود مختاری پر کوئی آنچ نہ آئے۔

مفتی محمد مکرم احمد صاحب نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہمارے لئے اُسوہ ٔ نبی ؐ کافی ہے۔ سیرت پاک اور صحابہ کرام رضی اللہ تعالی عنہم کی پیروی کرکے ہم دارین میں کامیاب ہو سکتے ہیں۔ غذا اور دوا بھی اللہ کے حکم سے فائدہ پہنچاتی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close