آئینۂ عالمتازہ ترین خبریں

کلبھوشن جادھو معاملہ: بین الاقوامی عدالت نے پاکستان کو دیا جھٹکا

بین الاقوامی عدالت (آئی سی جے) نے کہا ہے کہ کلبھوشن جادھو معاملے میں پاکستان نے ویانا معاہدے کی خلاف ورزی کی ہے۔ عدالت کے جج عبدالقوی یوسف نے اقوام متحدہ کو یہ اطلاع دی ہے۔

جسٹس یوسف نے بدھ کو آئی سی جےکی طرف سے اقوام متحدہ کو ایک رپورٹ سونپتے ہوئے کہا ہے کہ ’’عدالت نے یہ پایا ہے کہ پاکستان نے ویانا معاہدے کے آرٹیکل 36 کے تحت وعدے کی خلاف وزی کی ہے اورس معاملے میں کافی کچھ کیا جانا ہے۔‘‘ میں اب جادھو معاملے میں 17 جولائی 2019 کو آئی سی جے کی طرف سے دئیے گئے فیصلے کا ذکر کرتا ہوں۔ ہندوستانی شہری کلبھوشن جادھو کو پاکستان نے جاسوسی کے الزام میں گرفتار کرکے جیل میں بند کردیا تھا اور وہاں کی فوجی عدالت نے کلبھوشن جادھو کو اپریل 2017 میں موت کی سزا سنائی تھی۔

اس معاملے کو ہندوستان نے اٹھایا تھا اور یہ کہا تھاکہ ویانا معاہدے کی 1963 کے تحت کلبھوشن کو پاکستان ڈپلومیٹک رابطہ (کونسلر ایکسس) کی اجازت دینے سے منع کر رہا ہے۔ جسٹس یوسف نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ ایسا کرکے پاکستان نے ویانا معاہدے کے تحت اپنی ذمہ داریوں کو ادا نہیں کیا ہے۔

انہوں نے کہاکہ ’’جادھو کی سزا کے بارے میں موثر طریقے سے جائزہ اور سزا پر از سر نو غور کرنے کی بھی درخواست کی گئی ہے اور یہ کہا ہے کہ اس معاملے میں دیگر ثبوتوں پر بھی غور کیا جانا چاہئے۔ جسٹس نے یہ بھی کہا ہے کہ ویانا معاہدہ کی خلاف ورزی سے جو اثر پڑا ہے اس پر اور اس معاملے میں تعصب برتا گیا ہے اس کی پوری جانچ کرانے کی پاکستان کو گارنٹی دینی چاہئے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close