اپنا دیشتازہ ترین خبریں

کشمیر میں اہم رہنماؤں کو نظربند رکھنے کی وجہ بتائے حکومت: کانگریس

کانگریس نے کہا ہے کہ جموں کشمیر میں سب کچھ ٹھیک ہونے کے بارے میں پوری دنیا میں شور مچارہی مودی حکومت کو بتانا چاہیے کہ کشمیر کو ملک کا اٹوٹ حصہ بنائے رکھنے میں تعاون کرنے والے مرکزی دھارے کے رہنماؤں کو حراست میں کس وجہ سے رکھا گیا ہے۔

کانگریس ترجمان پون کھیڑا نے جمعہ کو یہاں پارٹی ہیڈکوارٹر میں پریس کانفرنس میں کہاکہ جموں کشمیر میں مرکزی دھارے کے سبھی رہنما حراست میں ہیں۔ ان رہنماؤں نے کشمیر کو ملک کا حصہ بنائے رکھنے کے لیے مسلسل کام کیا ہے اور اپنا اہم تعاون دیا ہے۔ ان رہنماؤں کو حراست میں رکھنے کا کوئی جواز نہیں ہے اور حکومت کو بتانا چاہئے کہ انھیں کس وجہ سے نظر بند کیا گیا ہے۔

انھوں نے دعوی کیاکہ جموں کشمیر میں سب کچھ ٹھیک نہیں ہے۔ وہاں فون کی گھنٹی نہیں بج رہی ہے، اسپتالوں میں دوائیاں نہیں ہیں اور بجلی نہیں ہونے سے لوگ پریشان ہیں۔ موبائل خدمات ار موبائل ڈاٹا وہاں بند ہیں۔ لوگ اپنے عزیزوں سے بات نہیں کر پا رہے ہیں۔ یوروپ کے ارکان پارلیمنٹ کو وہاں بھیجا جا رہا ہے لیکن ملک کے ارکان پارلیمنٹ کو وہاں جانے کی اجازت نہیں دی جا رہی ہے۔

ترجمان نے کہاکہ مرکزی دھارے کے رہنماؤں کوحراست میں رکھنے کی کوئی وجہ نہیں ہے۔ حیرت کی بات ہے کہ ڈاکٹر فاروق عبداللہ جیسے لوگ بند ہیں۔یہ وہی ڈاکٹر عبداللہ ہیں جو مسٹر اٹل بہاری واجپئی کی قیادت والی حکومت میں مرکز ی وزیر رہے ہیں۔ وہ لوک سبھا رکن ہیں اور پیر سے پارلیمنٹ کا سرمائی اجلاس شروع ہو رہا ہے۔ ڈاکٹر عبداللہ منتخب نمائندہ ہونے کی وجہ سے کشمیر کے لوگوں کی آواز اٹھاتے لیکن نہیں اٹھا پائیں گے۔ انھیں علیحدگی پسندوں کی صف میں شامل کرکے حراست میں رکھا گیا ہے۔ ان کا ایک بھی ٹوئیٹ اشتعال انگیز نہیں ہے پھر بھی وہ حراست میں ہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close