اپنا دیشتازہ ترین خبریں

کشمیر مسئلہ: فاروق عبداللہ اور عمر نے کی پی ایم مودی سے بات چیت

نیشنل کانفرنس (این سی پی) کے صدر فاروق عبداللہ کی قیادت میں پارٹی کے ایک وفد نے جمعرات کو وزیراعظم نریندر مودی سے ملاقات کی اور ان سے عدالتی معاملوں کا حل عدالت کے ذریعہ یا دیگر معاملوں کا حل ریاست کی منتخب حکومت کے ذریعہ سے کرانے کی درخواست کیا ہے۔

اس میٹنگ کو کافی اہم قرار دیا جارہا ہے کیونکہ اس طرح کے شبہ کا اظہار کیا جارہا ہے کہ مرکزی حکومت 15 اگست کے بعد ریاست سے متعلق آئین کے آرٹیکل 35 اے کو ختم کرسکتی ہے۔ جموں وکشمیر کے گورنر ستیہ پال ملک نے حالانکہ ان افواہوں کو بدھ کو مسترد کردیا تھا اور کہا تھا کہ آرٹیکل 35 اے کو ختم کرنے کا کوئی ارادہ نہیں ہے۔

وفد میں شامل ریاست کے سابق وزیراعلی اور پارٹی کے نائب صدر عمر عبداللہ نے وزیراعظم سے ریاست کی موجودہ صورت حال کے سلسلے میں اپنے خیالات کا اظہار کیا۔مسٹر عمر اللہ نے ٹوئٹ کرتے ہوئے لکھا کہ“پارٹی صدر فاروق عبدا للہ اور ایم پی جسٹس (ر) مسعودی کی قیادت میں این سی پی کے ایک وفد نے صبح وزیراعظم سے ملاقات کی۔اس دوران ہم نے مسٹر مودی کو ریاست کی موجودہ صورت حال کے بارے میں اپنے خیالات سے ان کو باخبر کیا۔”

انہوں نے کہا کہ وفد نے ان سے (مودی) سے جلدبازی میں کوئی ایسے اقدام نہ کرنے کی اپیل کی جس سے ریاست کی صورتحال خصوصی طور سے پہلے سے ہی خراب وادی کی حالت اور مزید خراب نہ ہو۔ انہوں نے کہا کہ“ہم نے خصوصی طور سے ان سے عدالتی معاملوں کا حل عدالت کے ذریعہ اور دیگر معاملوں کا حل منتخب حکومت کے ذریعہ سے کرانے کی اپیل کی ہے۔”

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close