اپنا دیشتازہ ترین خبریں

کرناٹک حکومت کو بچانے کے لئے کمارسوامی کی قربانی؟

کرناٹک میں جاری بحران کو دیکھتے ہوئے کانگریس اور جنتا دل (سیکولر) مخلوط حکومت کے وزیر اعلی ایچ ڈی کمار سوامي اپنے عہدہ سے استعفی دے کر ریاست کی باگ ڈور سینئر کانگریسی لیڈر ملک ارجن کھڑگے کو سونپ سکتے ہیں تاکہ ریاست کی 13 ماہ پرانی کانگریس -جنتا دل دل (ایس) مخلوط حکومت کو کسی بھی طرح بچایا جا سکے۔

کانگریس کے اعلی سطحی ذرائع کے مطابق اس سلسلہ میں یہ تجویز سابق وزیر اعظم اور جنتا دل (ایس) لیڈر ایچ ڈی دیو گوڑا نے کانگریس کے سربراہ سونیا گاندھی کو دی ہے تاکہ ریاست میں بھارتیہ جنتا پارٹی کی جانب سے پیدا کئے گئے بحران کا سامنا کیا جا سکے۔ خیال رہے ریاست میں مخلوط حکومت کے 13 ممبران اسمبلی نے استعفی دے دیا ہے۔

ذرائع نے بتایا کہ مسٹر گوڑا نے کل رات اس معاملہ میں مسز گاندھی سے رابطہ کرکے یہ مشورہ دیا اور یہ یقین دہانی بھی کرائی کہ ان کی پارٹی مسٹر کھڑگے کو حمایت دے گی تاکہ کسی بھی حالت میں بی جے پی کو اقتدار میں آنے سے روکا جاسکے۔ ذرائع نے بتایا کہ مسز گاندھی نے رات ہی پارٹی کی کور کمیٹی کی میٹنگ بلائی جس میں مسٹر گوڑا کے ے نام کی تجاویز پر غور کیا گیا اور مسٹر کھڑگے کو کرناٹک بھیجنے کا فیصلہ کیا گیا تاکہ ریاست میں مخلوط حکومت کو بچایا جا سکے۔ ابھی تک ریاست کی سیاست سے دوری بنائے رکھنے والے مسٹر کھڑگے نے پارٹی کے کچھ غیرمطمئن ممبران اسمبلی سے رابطہ کرکے ان کے مسائل جاننے کی کوشش کی ہے۔ اگرچہ ان 13 اراکین اسمبلی کے استعفے ابھی منظور نہیں ہوئے ہیں۔

مسٹر کھڑگے نے یہاں آج صحافیوں کو بتایا“اسمبلی اسپیکر کے این رمیش کمار نے ابھی تک ان اراکین اسمبلی کے استعفیٰ کو منظور نہیں کیا ہے اور کئی ممبران اسمبلی اپنا فیصلہ تبدیل کر سکتے ہیں”۔ انہوں نے یہ بھی کہا“میں نے کچھ غیرمطمئن ممبران اسمبلی سے بات چیت کی ہے، وہ کانگریس چھوڑ کر کہیں اور جانے کے خواہش مند نہیں ہیں۔ کانگریس پارٹی تمام ممبران اسمبلی کو وہپ جاری کرے گی اور 12 جولائی کو طلب کئے گئے اسمبلی سیشن میں تمام ممبران اسمبلی سیشن میں حصہ لیں گے”۔

دریں اثنا کانگریس کے ایک سینئر لیڈر نے بتایا“اگر مسٹر کھڑگے ریاست کی باگ ڈور سنبھالتے ہیں تو حیدرآباد- کرناٹک علاقے کے کچھ بی جے پی رکن اسمبلی بھی کانگریس میں شامل ہو سکتے ہیں”۔ اس پورے سیاسی واقعات سے نمٹنے کے لئے کانگریس کے اعلی رہنماؤں کی میٹنگوں کا سلسلہ جاری ہے اور کانگریس جنرل سکریٹری اور کرناٹک معاملات کے انچارج کے سی وینوگوپال کے آج رات مسٹر گوڑا اور وزیر اعلی سے ملاقات کرنے کی امید ہے۔ مسٹر گوڑا نے حال ہی میں انکشاف کیا ہے کہ جب 2018 میں مخلوط حکومت کے قیام کی تجویز سامنے آئی تھی تو انہوں نے وزیر اعلی کے عہدہ کے لئے مسٹر کھڑگے کے نام کا مشورہ دیا تھا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close