اپنا دیش

کرناٹک: تحریک اعتماد پر ووٹنگ کے بغیر ہی اسمبلی کی کارروائی جمعہ تک ملتوی

کرناٹک کے گورنر وجو بھائی والا کی طرف سے ایوان جمعرات کو تحریک اعتماد پر ووٹنگ کرائے جانے کی ہدایات کے بعد آج ہنگامے کے درمیان اسمبلی اسپیکر کے آر رمیش کمار نے ایوان کارروائی جمعہ تک ملتوی کر دی۔

پارلیمانی امور کے وزیر کرشنا بایریگوڑا نے اس معاملے میں کہا کہ موصوف گورنر کی ہدایت کے پیچھے ان اپوزیشن بی جے پی اراکین اسمبلی کا مطالبہ کارفرما ہے، جنہوں نے ان (گورنر) سے ملاقات کرکے مداخلت کرنے کی گزارش کی تھی۔ سابق وزیر ایچ کے پاٹل (کانگریس) نے گورنر کی ہدایت پر سخت اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ گورنر اسمبلی کی کارروائی میں مداخلت نہیں کر سکتے ہیں۔ اس پر بی جے پی ارکان باسوراج بومءي اور مسٹر سریش کمار نے مخالفت جتاتے ہوئے کہا کہ گورنر کو ایوان کے اسپیکرکو ہدایات دینے کا مکمل اختیارہے۔

گورنر وجوبھائی والا کے موقف سے مشتعل کانگریس اراکین نے گورنر کے خلاف نعرے لگائے اور اپوزیشن اراکین کے ساتھ ان کی تلخ نوک جھونک ہوئی، جس سے ایوان میں ہنگامہ کی صورتحال پیدا ہو گئی۔ اس سے پہلے کرناٹک کے سابق وزیر اعلی جگدیش شیٹار کی قیادت میں بی جے پی کے ایک وفد نے گورنر سے ملاقات کی اور مخلوط حکومت کی جانب سے ایوان میں اعتماد کا ووٹ پیش کرائے جانے کے طریقے سے مطلع کرتے ہوئے اس معاملے میں مداخلت کرنے کی اپیل کی۔

بی جے پی لیڈروں کا الزام ہے کہ تحریک اعتماد پیش کرنے میں ایوان کے مقرر ہ اصولوں کو درکنار کر دیا گیا ہے۔ یہ دوسری بار ہے کہ جب کمارسوامي نے وزیر اعلی بننے کے بعد اسمبلی میں اعتماد کا ووٹ پیش کیا ہے۔ دو سو پچیس رکنی اسمبلی میں گزشتہ سال مئی میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) لیڈر بی ایس یدیورپا کے استعفی کے بعد کمارسوامي نے پہلی بار اعتماد کا ووٹ حاصل کیا تھا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close