تازہ ترین خبریںدلی نامہ

’کرم ویر نہیں، بیان ویر‘ ہیں کجریوال: ڈاکٹر نریش کمار

اسکولوں پر دہلی حکومت کی بیان بازی کے خلاف دہلی کانگریس چلائے گی تحریک

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
آل انڈیا کانگریس کمیٹی کے رکن اور منڈکا اسمبلی سے کا نگریس کے امیدوار رہے سینئر کا نگریسی لیڈر ڈاکٹر نریش کمار نے آج دہلی کے وزیر اعلی اروند کجریوال پرتعلیمی ادروں کو سیاسی اکھاڑہ بنانے اور ان کو سیاسی فائدے کیلئے استعمال کر نے کا الزام لگا تے ہوئے کہاکہ دہلی میں تعلیمی نظام کے سب سے بڑے دشمن کجریوال ہیں، جنہوں نے تعلیمی ادارے جنہیں مندر، مسجد، گرو دوارے اور گرجہ کی طرح احترام سے دیکھا جاتا ہے کو سیاست کا اکھا ڑہ بنا دیا ہے۔

انہوں نے کہاکہ’کجریوال کرم ویر نہیں،بیان ویر ہیں، جوتعلیم کے تئیں جھوٹی تشہیر کر کے لوگوں کو گمراہ کر نے کا کام کر رہے ہیں۔ڈاکٹر نریش کمار نے کہاکہ جلد ہی دہلی پردیش کانگریس کمیٹی کجریوال حکومت کے اسکولوں کے جھوٹے پرو پیکنڈے کے خلاف تحریک چلائے گی اور کجریوال کے جھوٹ کا پردا فاش کر کے سچائی عوام کے سامنے لائیں گے۔

دہلی پردیش کانگریس کمیٹی کے سابق جنرل سکریٹری ڈاکٹر نریش کمار آج دہلی کے اسکولوں کے معیار کے سلسلے میں دہلی حکومت کی جانب سے کی جا رہی تشہیر پرپریس کا نفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ان کے ساتھ دہلی کانگریس کے چیف میڈیا کورڈی نیٹرمہدی ماجد بھی بطور خاص موجود تھے۔

دو نوں لیڈران نے دہلی کے سرکاری اسکولوں کے سلسلے میں کی جا رہی عام آ دمی پارٹی کی دہلی حکومت کی جانب سے کی جا رہی تشہیر کو گمراہ کن بتایا۔ ڈاکٹر نریش کمار نے کہاکہ دہلی کی کجریوال حکومت صرف اشتہاری حکومت ہے اور کجریوال ملک کے سب سے بڑے’بیان ویر‘ ہیں۔سرکاری اسکولوں کے جو اعداد یہ بتا رہے ہیں حقیقت اس کے بر عکس ہے۔’آپ‘ حکومت کے آ نے کے بعد اسکولوں کا معار کم ہوا ہے۔دہلی کے سرکاری اسکولوں میں 10ویں کا ریزلٹ خراب رہا ہے۔

انہوں نے کہاکہ سال 2005میں یہ نتیجہ 48فیصد تھا،کا نگریس کے دور اقتدار میں 2010-2009میں یہ 92فیصد تھا، اب کجریوال حکومت میں یہ ریزلٹ گھٹ کر سال 2018میں 68اور 2019میں محض 71فیصد ہی رہا۔ جب سے کجریوال حکومت آئی ہے تب سے دہلی کے سرکاری اسکولوں کا معایر مسلسل کم ہو رہا ہے۔جو 92فیصد سے کم ہو کر 71فیصد پر آ گیا ہے۔ جبکہ وزیر اعلی کجریوال اپنے جھوٹے بیانوں سے دہلی کے عوام کو گمراہ کر رہے ہیں۔ ڈاکٹر نریش کمار نے کہاکہ کجریوال حکومت دسویں کے نتائج بہتر کر نے کی سمت کام نہیں کر رہی ہے بلکہ دہلی کے سرکاری اسکولوں میں نوویں کلاس کے 50فیصد بچوں کو فیل کیا جا رہا ہے۔

انہوں نے بتا یا کہ دہلی کے سرکاری اسکولوں میں دن بدن تعلیمی میعار کم ہو نے کے سبب لوگوں نے بچوں کو سرکاری اسکولوں کے بجائے پرا ئیوٹ اسکولوں میں پڑھا نا شروع کر دیا ہے۔ڈاکٹر نریش کمار نے کہاکہ عام آ دمی پارٹی نے اپنے انتخابی منشور میں اعلان کیا تھا کہ اگر ان کی حکومت ا ٓتی ہے تو دہلی میں 500اسکول کھولے جائیں گے جبکہ اببی تک ایک بھی نیا اسکول دہلی کی ’آپ‘ حکومت نے نہیں کھولا ہے۔دہلی میں صرف 30-25اسکول سال 2015کے بعد بنے ہیں جن کا سنگ بنیاد دہلی کی سابق وزیر اعلی شیلا دکشت نے رکھا تھا وہی اسکول بن کر تیار ہوئے ہیں۔ انہوں نے الزام لگا یا کہ کجریوال اسکولوں کا معیار بلند کر نے کے بجا ئے ان میں سیاستداخل کر رہے ہیں، مینجمنٹ کمیٹی میں 12افراد بچوں کے والدین کے بجائے ’آپ‘ کارکنان کو بیٹھا دیا ہے، جو وہاں سے کجریوال حکومت کی جھوٹی تشہیر کر رہے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہاکہ عام آ دمی پارٹی بی جے پی کی ’بی‘ ٹیم ہے،یہ دونوں آ پس میں نورا کشتی کرکے عوام کو گمراہ کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ کجریوال کے جھوٹ کے خلاف دہلی پردیش کا نگریس کمیٹی تحریک چلا ئے گی اور سچ عوام کے سامنے لا ئے گی۔انہوں نے مرکزی حکومت کو بھی نشانہ بناتے ہوئے کہاکہ آ ج ملک میں ایک غیر اعلانیہ ایمر جنسی کا ماحول ہے، جو آواز حق اٹھ رہی ہے اس کو دبا یا جا رہا ہے۔

انہوں نے بتایا کہ دہلی کے سرکاری اسکولوں میں سال 2011میں 13لاکھ 88ہزار بچے تھے، 2012میں 14لاکھ 88ہزار ہوئے، 15-2014 میں 15لاکھ 38ہزار، 16-2015میں یہ تعداد 15لاکھ 9ہزار، 17-2016میں 15لاکھ 27ہزار، 18-2017میں گھٹ کر 14لاکھ 81ہزار ہوئی اور سال 2019-2018میں یہ تعداد 14لاکھ 98ہزار ہے۔جبکہ پرائیوٹ اسکولوں میں سال 11-2010میں 11لاکھ 73ہزار بچے تھے،15-2014میں بڑھ کر 14لاکھ 70ہزار ہوئے اور 19-2018میں بڑھ کر 16لاکھ 55ہزار بچے تعلیم حاصل کر رہے ہیں۔ ان اعداد سے یہ واضح ہو جا تا ہے کہ دہلی کے سرکاری اسکولوں کا میعار بڑھا نہیں بلکہ کم ہوا ہے، جبکہ کجریوال سرکاری سکولوں کے سلسلے میں جھوٹی تشہیر کرکے اپنی پیٹھ تھپتھپا رہے ہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close