اترپردیشتازہ ترین خبریں

کرشن پال سنگھ سے بنے سوامی چنمیانند

اترپردیش میں شاہ جہاں پور کی قانون کی طالبہ کے ذریعہ عصمت دری کے الزام کے بعدتقریباً ایک مہینے سے سرخیوں میں آئے سابق وزیر داخلہ سوامی چنمیانند بنیادی طور پر گونڈا ضلع کے رہنے والے کرشن پال سنگھ ہیں۔

تقریباً آٹھ سال میں یہ دوسرا موقع ہے جب سوامی چنمیانند پر عصمت دری کے الزامات عائد ہوئے ہیں۔ اس سے پہلے ایک اسکول کی طالبہ نے بھی سوامی پر آبروریزی کا الزام لگا کر مقدمہ درج کرایا تھا۔ تقریباً آٹھ سال بعد چنمیانند پر ان ہی کی کالج کی ایک طالبہ نے جنسی استحصال کے سنگین الزامات عائد کیے اور معاملہ سپریم کورٹ تک پہنچا اور اے ٹي سی نے جانچ کے بعد آج انہیں گرفتار کرکے جیل بھیج دیا۔

گونڈا ضلع کے گوگیا پچدیورا گاؤں کے مقامی باشندے کرشن پال کی پیدائش تین مارچ 1947 کو ہوئی تھی۔ گھر کا ماحول مذہبی تھا۔ سادھو سنتوں کا آنا جانا رہتا تھا۔ اسی وجہ سے کرشن پال پر بھی کا اثر پڑا اور انٹرمیڈیٹ کے بعد انہوں نے گھر چھوڑ دیا اور پنجاب چلے گئے۔ کچھ وقت تک وہاں رہنے کے وہ بعد ورنداون آ گئے تھے۔ سال1971 میں چنمیانند پرمارتھ آشرم رشی کیش پہنچے۔ رشی کیش میں سادھو سنت کے بیچ رہنے پر انہیں وہاں چنمیانند کا نام ملا اور اس طرح سے وہ کرشن پال سنگھ سے چنمیانند ہو گئے۔

انہوں نے انسٹی ٹیوٹ آف اوریجنل فلاسفي سے گریجویشن اور ماسٹرس کا امتحان پاس کیا اور 1982 میں فلاسفی میں بنارس یونیورسٹی سے پی ایچ ڈی کی۔ کانگریسی خاندان سے تعلق رکھنے کے باوجود وہ راشٹریہ سوئم سویک سنگھ (آر ایس ایس)سے جڑ گئے۔ ان کے چچیرے بھائی امیشور پرتاپ سنگھ کانگریس سے رکن اسمبلی رہے لیکن چنمیانند آر ایس ایس کے نظریات کے حامی تھے۔ وہ جے پرکاش نارائن کی تحریک سے جڑے۔ انہوں نے آر ایس ایس کی ایک آتمتا یاترا میں بھی حصہ لیا پھر رام جنم بھومی تحریک سے جڑ گئے۔

انہوں نے سات اکتوبر 1984 کو سریو کے ساحل پر رام جنم بھومی کا عہد لیا۔ سوامی چنمیانند 19 جنوری 1986 کو رام جنم بھومی آندولن سنگھرش سمیتی کے قومی کنوینر بنے۔ سال 1989 میں سوامی نشچلانند کے عہدہ چھوڑنے کے بعد تقریبا 30 سال پہلے سوامی چنمیانند شاہجھاں پور ممکش آشرم کے منتظم بن کر شاہ جہاں پور آئے۔ اس دوران ان کا سیاسی قد بھی تیزی سے بڑھا اور چنمیانند تین بار رکن پارلیمنٹ رہے۔ سال 1991 میں بی جے پی نے انہیں بدایوں سے ٹکٹ دیا اور وہ جیت گئے۔ اس کے بعد 1996 میں شاہ جہاں پور سے ہارے، 1998 میں جونپور کے مچھلي شھر سے رکن پارلیمنٹ بنے، 1999 میں جونپور سے جیتے۔ سال 2003 میں اٹل بہاری واجپئی حکومت میں مرکزی وزیر داخلہ کی ذمہ داری ملی تھی۔ سوامی آنجہانی وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی کے قریبی رہے ہیں۔

گو رکش پیٹھ سے بھی سوامی چنمیانند بہت پرانا ناطہ رہا ہے۔ سالوں سے وہ گورکش پیٹھ کے پروگراموں میں جاتے رہے ہیں۔ مہنت اویدیناتھ کو وہ اپنا سیاسی آئڈیل مانتے رہے ہیں۔ شاہ جہاں پور اور ہریدوار سمیت ملک کے کئی اداروں کے سوامی چنمیانند صدر رہے ہیں۔ وقت کا مزاج کب بدل جائے پتہ نہیں چلتا۔ ایک وقت ایسا تھا جب وزیر داخلہ بنے سوامی چنمیانند کی حفاظت میں پولیس ان کے آگے پیچھے رہتی تھی، لیکن آج نظارہ بدل گیا اور پولیس انہیں حراست میں لے کر عدالت سے جیل لے جا چکی ہے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close