تازہ ترین خبریںدلی نامہ

کانگریس کے وفد نے الیکشن کمیشن میں کی کجریوال کی شکایت

نئی دہلی (انور حسین جعفری)
دہلی کے سابق رکن پارلیمنٹ سندیپ دکشت کی قیادت میں دہلی کانگریس کے وفد نے دہلی کے چیف الیکٹرول آفیسر سے اولڈ سینٹ اسٹیفن کالج واقع دفتر میں ملاقات کرکے میمورنڈم سونپا۔ جس میں انہوں نے دہلی کے وزیراعلی اور عام آدمی پارٹی کے قومی کنوینر اروند کجریوال کے خلاف فرقہ وارانہ اور اشتعال انگیز بیانات دینے کی شکایت کرتے ہوئے سخت کاروائی کا مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعلی کجریوال ووٹروں کو متوجہ کرنے کےلئے فرقہ وارانہ راستہ اپنا رہے ہیں۔ وفد میں سندیپ دکشت کے ساتھ دہلی کے سابق وزیر منگت رام سنگھل، رما کانت گو سوامی، سینئر وکیل محمود پراچہ، ترجمان جتیندر کمار کوچر اور اونیکا مہرو را شامل تھے۔

میڈیا سے بات کرتے ہوئے سندیپ دکشت نے بتایا کہ وفد نے دہلی کے چیف الیکشن کمشنر کی توجہ کجریوال کے ٹی وی پر دیئے گئے بیان کی طرف دلائی ہے، جس میں کجریوال نے مسلم ووٹورں کو مخاطب کرتے ہوئے کہاہے کہ مسلم لوک سبھا انتخابات میں کانگریس کو ووٹ نہ دیں کیوں کہ کانگریس کو کوئی ہندو بھی ووٹ نہیں دے رہا ہے۔ وفد نے مطالبہ کیا کہ کجریوال کے اس فرقہ وارانہ بیان پر الیکشن کمیشن کو سخت قدم اٹھانا چا ہئے۔ لوک سبھا انتخابات میں کجریوال کا یہ بیان فرقہ پرستی پھیلانے والا بیان ہے جو ہند مسلمان کو تقسیم کرنے کا کام کرے گا۔ وزیر اعلی ووٹروں کو متوجہ کرنے کےلئے اسی طرح کے فرقہ وارانہ بیانات کا سہار لے رہے ہیں۔

سندیپ دکشت نے کہا کہ وفد نے الیکشن کمیشن سے مطالبہ کیا ہے کہ انتخابی مہم کے دوران وزیراعلی کجریوال نے اس طرح کے فرقہ وارانہ اور اشتعال انگیز اور غیر ذمہ دارانہ بیانات پر الیکشن کمیشن کو کجریوال کے انتخابی تشہیر پر پابندی لگائی جائے۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close