اترپردیشتازہ ترین خبریں

ڈاکٹرکفیل کے ماموں کا گولی مار کر قتل

اترپردیش کے گورکھپور کے راج گھاٹ علاقے میں علاحدہ پور بنکٹی چک میں بدمعاشوں نے سابق زمیندار نصرت اللہ وارثی کو گولی مار قتل کردیا۔ پولس نے اتوار کو یہاں یہ اطلاع دی۔

انہوں نے بتایا کہ سنیچر کی رات تقریبا 11 بج بجے 55 سالہ مسٹر وارثی رات کا کھانا کھانے کے بعد مکان کے پاس چہل قدمی کر رہے تھے۔ اس دوران مسٹر وارثی کو گھر جاتے وقت ایک نوجوان سے بات چیت کرتے ہوئے اپنے گھر چلے گئے۔ اس کے بعد اچانک گولی چلنے کی آواز سنائی دی۔ انہوں نے بتایا کہ گولی کی آواز سن کر محلے کے لوگ ان کے گھر پہنچے تو مسٹر وارثی کا خون سے لت پت لاش پڑی ہوئی تھی۔ جائے واقع سے خالی کارتوس برآمد ہوا ہے۔ واقعہ کی وجہ ابھی تک معلوم نہیں ہوسکی ہے۔ پہلی نظر میں لگتا ہے کہ زمین سے متعلق تنازعہ کی وجہ سے یہ قتل کیا گیا۔

پولس سی سی ٹی وی فوٹیج سے حملہ آور کی شناخت کرنے کی کوشش کررہی ہے۔ مقتول مسٹر وارثی بابا راگھو داس میڈیکل کالج گورکھپور معاملے کے ملزم ڈاکٹر کفیل خان کے ماموں تھے۔ واضح رہے کہ اگست 2017 میں بابا راگھوداس میڈیکل کالج گورکھپور میں ہوئی بچوں کی موت کے معاملے میں ڈاکٹر کفیل خان ملزم ہیں۔ گزشتہ دنوں علی گڑھ مسلم یونیورسٹی میں اشتعال انگیز تقریر کرنے کے معاملے میں ڈاکٹر کفیل کو گرفتار کیا گیا تھا۔ اس وقت وہ متھرا جیل میں قید ہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close