بہار- جھارکھنڈتازہ ترین خبریں

چارہ گھوٹالہ کے ایک معاملے میں لالو کو ضمانت، رہائی پھر بھی نہیں

جھارکھنڈ ہائی کورٹ نے غیر منقسم بہارکے مشہور چارہ گھوٹالہ معالے میں سزایافتہ راشٹریہ جنتادل (آرجے ڈی) سپریمو لالو پرسادیادو کو دیوگھر خزانے سے غیر قانونی نکاسی کے معاملے میں آج ضمانت دے دی۔

جسٹس اپریش کمار سنگھ کی سنگل بینچ نے دیو گھر خزانے سے غیر قانونی نکاسی کے معاملے میں ضمانت عرضی پر سماعت کے بعد مسٹر یادو کو 50-50 ہزار روپے کے ذاتی مچلکے پر ضمانت دے دی۔ اس معاملے میں سزا کی آدھی مدت گذر جانے کو بنیاد بناکر ضمانت عرضی دائر کی گئی تھی۔ عدالت نے انہیں اپنا پاسپورٹ جمع کرانے کا حکم بھی دیا ہے۔ آرجے ڈی صدر دمکا اور چائباسا خزانے سے غیر قانونی نکاسی معاملے میں سزا یافتہ ہونے کی وجہ سے فی الحال جیل سے باہر نہیں نکل پائیں گے۔ جب تک انہیں ان دونوں معاملوں میں بھی ضمانت نہیں مل جاتی تب تک انہیں جیل میں ہی رہنا ہوگا۔آرجے ڈی سپریمو کی جانب سے اس سال 13 جون کو دیو گھر خزانے سے غیر نکاسی معاملے میں ہائی کورٹ میں ضمانت عرضی دائر کی گئی تھی۔

عدالت نے 05 جولائی کو اس معاملے کی سماعت کی اور عرضی کنندہ کو اپنا موقف رکھنے کی ہدایت دی۔ اس معاملے میں آج ہوئی سماعت کے بعد کورٹ نے مسٹر یادو کی ضمانت عرضی منظور کرلی۔ غورطلب ہے کہ مرکزی جانچ بیورو (سی بی آئی) کی خصوصی عدالت نے بہار کے سابق وزیراعلیٰ مسٹر یادو کو دیو گھر خزانے سے قریب 89.27 لاکھ روپے کی غیر قانونی نکاسی کے معاملے میں 23 دسمبر 2017 کو قصور وار قرار دیا تھا۔ اس معاملے میں انہیں ساڑھے تین سال کی سزا سنائی گئی تھی۔ وہیں مسٹر یادو کو دمکا خزانے سے غیر قانونی نکاسی کے معاملے میں پانچ سال اور چائباسا خزانے سے غیر قانونی نکاسی معاملے میں سات سال کی سزا سنائی گئی تھی۔

مسٹر یادو کی 17 مارچ 2018 کو طبیعت خراب ہونے پر انہیں پہلے رانچی کے راجندر انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنس اور پھر آل انڈیا انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنس دہلی میں داخل کیا گیا تھا۔ عدالت نے انہیں گیارہ مئی کو علاج کیلئے چھ ہفتے کی پیرول منظور کی تھی۔ اس کے بعد پیرول کی مدت پہلے چودہ اگست اور پھر ستائیس اگست تک بڑھا دی گئی۔ عدالت نے مسٹر یادو کو تیس اگست کو خود سپردگی کرنے کی ہدایت دی تھی۔ اس کے بعد سے وہ راجندر انسٹی چیوٹ آف میڈیکل سائنس میں زیر علاج ہیں۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close