اپنا دیشتازہ ترین خبریں

پی ایم مودی کی نیوزی لینڈ اور ایسٹونیا کے ساتھ دوطرفہ بات چیت

وزیراعظم نریندرمودی نے اقوام متحدہ جنرل اسمبلی کے 74 ویں اجلاس سے الگ یہاں نیوزی لینڈ کی وزیراعظم جیسنڈا آرڈرن اور ایسٹونیا کی صدر کرسٹی کیلی جولیڈ سے ملاقات کرکے مختلف مسئلوں پر بات چیت کی۔

مسٹر مودی نے محترمہ آرڈرن کے ساتھ بدھ کو یہاں دوطرفہ تعلقات کے حالات کا جائزہ لیا اور سیاسی، اقتصادی، دفاعی، سکیورٹی اور دونوں ملکوں کے لوگوں کے درمیان تعلقات کو مضبوط کرنے کے لئے کئے گئے اقدامات پر غورو خوض کیا۔ اس دوران دونوں لیڈروں نے بین الاقوامی دہشت گردی کے مسئلے سمیت آپسی مفاد کے عالمی اور علاقائی مسئلوں پر بھی تبادلہ خیال کیا اور دونوں ملکوں کے درمیان نظریات و خیالات کا تبادلہ کرنے کی ستائش کی۔

دونوں ملکوں نے پلوامہ اور کرائسٹ چرچ میں ہوئے دہشت گردانہ حملوں کی سخت مذمت کرتے ہوئے دہشت گردی کے مسئلے پر ایک دوسرے کی حمایت کی۔ ہندوستان نے کرائسٹ چرف کال آف ایکشن پر نیوزی لینڈ اور فرانسس کی مشترکہ پہل کی بھی حمایت کی۔ محترمہ آرڈرن نے کہا کہ نیوزی لینڈ میں غیر مقیم ہندوستانی اور طلبہ دونوں ملکوں کے درمیان اہم پل ہیں اور دونوں ملکوں کے دوستانہ تعلقات میں اہم تعاون کرتے ہیں۔

دوسری جانب،ایسٹونیا کی صدر کے ساتھ اپنی میٹنگ میں مسٹر مودی نے اگست میں ایسٹونیا میں ہندوستانی نائب صدر جمہوریہ ایم وینکئیا نائیڈو کے دورے کے دوران دونوں ملکوں کے درمیان دوطرفہ تعلقات کے وسیع پہلوؤں پر ہوئی بات چیت کے سلسلے میں تفصیلی گفتگو کی۔ وزارت خارجہ کے ترجمان رویش کمار نے کہا،“اس میٹنگ نے ایسٹونیا کو دوطرفہ تعاون کے مواقع کے بارے میں اپنے خیالات ظاہر کرنے کا موقع دیا گیا، تاکہ دونوں ملکوں کے درمیان موجودہ دوستانہ تعلقات کومزید مضبوط کیا جاسکے۔

انہوں نے کہا کہ دونوں لیڈرون نے ای گورنینس،سائبر سکیورٹی اور جدت کے شعبہ میں دوطرفہ تعاون کو اور وسیع کرنے کے مسئلے پر بھی بات چیت کی۔مسٹر مودی نے 2022-2021کے لئے اقوام متحدہ سلامتی کونسل کی غیر مستحکم سیٹ کے لئے ہندوستان کی امیدواری کی حمایت دینے کے لئے ایسٹونیا کا شکریہ بھی ادا کیا۔

اور دیکھیں

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
Close
Close